ہرنو کے پانی میں ایک اور نوجوان کی پراسرارموت۔


ایبٹ آباد:قتل یا پرسرار ہلاکت ۔ایک اورنوجوان ہرنو میں ڈوب کر جاں بحق۔نعش پوسٹ مارٹم کے لیئے ڈی ایچ کیو ہسپتال منتقل۔اس ضمن میں پولیس اورمقامی ذرائع نے صحافیوں کوبتایاکہ جمعہ کے روزبکوٹ کے رہائشی تین دوست سیر سپاٹے کے لئے ہرنو آئے ۔جہاں انہوں نے پانی میں نہاناشروع کردیا۔ تئیس سالہ سہیل ولد پرویز نہانے کے دوران پانی میں ڈوب کر جاں بحق ہوگیا۔ جس کی لاش کو مقامی لوگوں نے اپنی مدد آپ کے تحت ڈی ایچ کیوہسپتال منتقل کردیا۔ جہاں پوسٹمارٹم کے بعد لاش کو ورثاء کے حوالے کردیاگیا۔ مقامی ذرائع کے مطابق ہرنو میں پانی اتناگہرا نہیں ہے کہ اس میں ڈوب کر کوئی جان کی بازی ہار جائے۔ قبل ازیں پاکستان تحریک انصاف کے منحرک رہنماء آصف زبیر شیخ کے ملکیتی ماڈرن اسکول سسٹم کا ایک بچہ اسی مقام پر پانی میں پراسرار طور پر مارا گیا۔ جس کی پولیس نے ابھی تک تفتیش نہیں کی۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ ضلعی انتظامیہ ہرنو میں پراسرار اموات کا سخت نوٹس لیکر عوام الناس کی زندگیوں کے تحفظ کو یقینی بنائے۔


Comments

comments