پولیس کانسٹیبل مظہرقتل کیس میں تین نامزد ملزم گرفتار۔


ایبٹ آباد:پولیس کانسٹیبل مظہرقتل کیس ۔تین ملزمان عبوری ضمانتیں منسوخ ہونے پرگرفتار۔ کیس کی تفتیش ہری پور پولیس کو منتقل کردی گئی۔پولیس اورمقامی ذرائع کے مطابق کاغان کالونی میں قتل کئے جانیوالے پولیس کانسٹیبل مظہر کے قتل میں نامزد تین ملزمان کاغان کالونی کے رہائشی لقمان عرف لکی ولد سجاد،، سپلائی ترکنہ کے رہائشی احتشام شاہ ولد سیّدمجتبیٰ شاہ، جاوید شہید روڈ کے رہائشی زین ولدشاہدنے ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت سے عبوری ضمانتیں کروارکھی ہیں۔ ذرائع کے مطابق جمعہ کے روز تینوں ملزمان کی عبوری ضمانتوں پر وکلاء کی بحث کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیاگیاتھا۔ ہفتہ کے روزایڈیشنل سیشن جج نے تینوں ملزمان کی عبوری ضمانتیں منسوخ کردیں۔ جس کے بعدعدالت کے اندر سے ہی احتشام شاہ، زین اور لقمان عرف لکی کو ہتھکڑیاں لگاکر گرفتار کرلیاگیاہے۔

ذرائع کے مطابق تینوں ملزمان نے پولیس کی تفتیش پر عدم اعتماد کرتے ہوئے ڈی آئی جی ہزارہ کو کیس کی تفتیش ہری پور پولیس کو منتقل کروانے کی درخواست دی۔ جس پر ہری پورپولیس کے انسپکٹررحم نوازکی سربراہی میں تین رکنی تفتیشی ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ جس میں تھانہ سرائے صالح کے ایس ایچ او انورخان اور اے ایس آئی راشد شامل ہیں۔عبوری ضمانت منسوخ ہونے پر تینوں ملزمان کو ہری پور پولیس کی تفتیشی ٹیم نے حراست میں لیکر ہری پور منتقل کردیاہے۔ اور اتوار کے روز تینوں ملزمان کو ایم او ڈی کی عدالت میں پیش کرکے جسمانی ریمانڈ لیاجائے گا۔ واضح رہے کہ اس قتل کیس میں پولیس جاوید شہید روڈ کے رہائشی ولید ولدشفیق کو پہلے ہی گرفتارکرچکی ہے۔ جوکہ جیل میں بند ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق چارملزمان میں سے زین ولد شاہد سکنہ عثمانیہ سٹریٹ جاوید شہید روڈ قتل کیس کا اہم اور مرکزی ملزم ہے۔ وقوعہ کے وقت زین ولد شاہد نے ایک گھر کی گیلری سے اندھادھند فائرنگ کی۔ جس کے نتیجے میں پولیس کانسٹیبل مظہر کو چھاتی میں گولی لگی اور وہ موقع پر ہی مارا گیا۔ جبکہ زین نے فائرنگ کرنے کا سلسلہ جاری رکھا اور اس کی فائرنگ کی زد میں آکر حارث نامی لڑکا بھی گولیاں لگنے سے شدیدزخمی ہوگیا۔

ABBOTTABAD: Apr19 – Policemen Showing Waleed 2nd Year Student of Private College, Accused in Murder of Police Constable Mazhar. ONLINE PHOTO by Sultan Dogar

Comments

comments