پتے کی پتھری کاآسان علاج۔


ڈاکٹر مسعود اختر تنولی
صدر ہزارہ ہومیو پیتھک ایسوسی ایشن
0333-5261525
0300-5937385

واقع کنج قدیم روڈ ایبٹ آباد پر دُعا ہومیو پیتھک کلینک سے ڈاکٹر مسعود اختر تنولی آپ سب کی خدمت میں سلام پیش کرتا ہے میں اس سے پہلے بھی تقریباً ہر عنوان پر اپنا آرٹیکل لکھتا رہا ہوں اُن میں دل کی بیماریاں ۔گردے کی بیماریاں ،ڈیپریشن ،معدے کے امراض بواسیر ،قبض ،رحم کا ٹل جانا ،رحم کی سوزش ،یرقان A+B+C+D شامل ہیں ۔یرقان اے ،بی، سی، ڈی کے لاتعداد مریض ہومیو پیتھک طریقہ علاج کے ذریعے دُعا ہومیو پیتھک کلینک سے مکمل طور پر صحت یا ب ہو کر اب نارمل زندگی گزار رہئے ہیں ۔خدا کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ اُس نے ان لوگوں کو بھی ایک نئی زندگی ہومیو پیتھک طریقہ علاج کے ذریعے عطاء کی ہے ۔ہومیو پیتھک طریقہ علاج نہ صرف سستا بلکہ موثر علاج ہے بلکہ اس کا کوئی سائیڈ ایفیکٹ(Side effect)نہیں ہے ۔ہومیو پیتھک میڈیسن صرف بیامریوں کا علاج کرتی ہیں بلکہ مریض کا مکمل علاج کرتا ہے ۔آج میرے ایک جاننے والے نے مجھے پتے کی پھتری پر آرٹیکل لکھنے کو کہا ہے لہذا آج میرے آرٹیکل کا عنوان ہے ’’ پتے کی پتھری GALL STONES‘‘
تعریف(Definition)پِتے میں پتھریاں پیدا ہو جاتی ہیں ۔یہ بیماری بھی بہت کامن ہے ۔
وجوہات:Etiology
1 ۔زیادہ موٹاپے کے باعث 2 ۔زیادہ کیسٹرول کے باعث ،75 فیصد پتے کی پتھریاں کولیسٹرل سے ملکر بنتی ہیں اِن پتھریوں کا رنگ پیلا ہوتا ہے 25فیصد پتھریاں صفراء سے ملکر بنتی ہیں اِن کا رنگ کالا ہوتا ہے
3 ۔یہ بیماری مردوں کی نسبت خواتین میں زیادہ پائی جاتی ہے ۔
4۔شکم کا ایکسرے کروانے پر یہ پتھریاں دکھا ئی دیتی ہیں ۔لیکن کولیسٹرول سے بنی ہوئی پتھریاں ایکسرے میں دکھائی نہیں دیتیں ہیں 5۔شوگر کی بیماری بھی پتے میں پتھری کا باعث ہو سکتی ہے ۔

علامات : Symptoms
1 ۔ پتے میں سوزش کے باعث اور پتے میں پتھری کے باعث جو درد ہوتا ہے وہ ایک طرح کاہوتا ہے ۔اس میں اندازہ کرنا مشکل ہو جاتا ہے کہ یہ درد پتے کی سوزش کے باعث ہوا کرتا ہے یاپھر پتے کی پتھری کے باعث ۔2 ۔ پتے میں پتھری کا باعث پتے کی سوزش ہو جایا کرتی ہے لیکن کئی مرتبہ ایسا بھی دیکھنے میں آیا ہے ۔3 ۔ اگر پتے کی نالی میں پتھری پھنس جائے تو یہ کیفیت شدید تکلیف کا باعث بنتی ہے 4۔ اِس بیماری میں کئی کئی سال کوئی علامت پیدا نہیں ہوتی لیکن اگر علامات پیدا ہونے لگیں تو اچانک ہی شروع ہو جاتی ہیں اور شدید درد کی صورت بنتی ہے ۔5 ۔ متلی اور قے ہوتی ہے 6۔ بخار ہو جاتا ہے 7 ۔ پیٹ پھول جاتا ہے 8 ۔ پتے کے مقام پر دباؤ سے درد بڑھتا ہے 9 ۔ حرکت سے علامات زیادہ ہو جاتی ہیں 10 ۔ اگر پتھری کامن بائیل ڈکٹ میں پھنس جائے تو یرقان ہو جاتا ہے (کامن بائیل ڈکٹ یہ نالی پتے کو جگر سے ملاتی ہے)۔ ٹیسٹ (Test)خون کے ٹیسٹ کروانے پر سفید سیلز کی تعداد بڑھی ہوئی ہو گی ۔بلی روبن اور جگر کے انذائمز کا لیول زیادہ وہ گا ۔ٹیسٹ کے طور پر آپ صرف بلا C.B.C کروائیں ۔اس رپورٹ میں مندرجہ بالا چیزیں مِل جائیں گی اور ساتھ بلی روبن اور جگر کے انذائمز کا ٹیسٹ تحریر کریں ۔
پتے کا الٹرا ساؤنڈ (Ultrasound of Gall Baladder )مریض کا الٹر ساؤنڈ کروانا چاہیے اس سے پتہ چلے گا کہ پتے کا سائز بڑھا ہوا ہے اور اس میں پتھریاں موجود ہیں الٹرا ساؤنڈ سے پتے کی دیواروں کی موتائی اور سوزش کا بھی پتہ لگ جاتا ہے ۔ہائیڈ اسکین (Hide Scan)اِس سکین میں پتہ نظر نہیں آتا یا دیر سے نظر آتا ہے ۔اس طرح جب مریض کے اوپری حصے میں دائیں جانب سخت درد ہو جہاں دبانے سے درد زیادہ ہو جائے ۔تو بلڈ ٹیسٹ کروانا چاہیے ،تاکہ خون میں سفید سیلز کی تعداد کی زیادتی کا پتہ چلے گا ۔ اور الٹرا ساؤنڈ کروانے پر پتھری نظر آئے گی اب سوال یہ ہے کہ ہائیڈ اسکین کیونکر کروایا جائے تو اس کا جواب یہ ہے کہ پتہ کی سوزش الٹرا ساؤنڈ میں کلیئر نہیں ہو پاتی ۔پتے کی سوزش کا پتہ لگانے کے لئے ہمیں ’’ہائیڈ اسکین ‘‘ کروانا چاہیے ۔پتے کی سوزش / پتھری کے علاج میں غفلت مریض کی زندگی کے ساتھ کھیلنے کے برابر ہے ۔اس لئے اگر آپ ہومیو پیتھک ہومیو پیتھک ادویات سے علاج کریں تو گاہے بگاہے ٹیسٹ کروا کر دیکھیں کہ بیماری کِس حد تک کی ہے ۔اور کس حد تک ٹھیک ہو رہی ہے ۔اگر نہیں تو آپریشن کا مشورہ ضرور دیں ۔کرانک سوزش (Chronic Shaleeystitis)پتہ کی پتھری کے باعث پتہ کی سوزش کرانک صورت اختیار کر لیتی ہے جس کی علامات مندرجہ ذیل ہیں ۔
1 ۔اگر مریض کو پتے کے مقام پر بار بار درد کے اٹیک ہوتے ہیں اور بھوک کی کمی واقع ہو جاتے ہے ۔
2 ۔ یرقان کی علامات ظاہر ہونے لگتی ہیں 3 ۔ ہر وقت ہلکا ہلکا بخار اور تھکاؤٹ رہتی ہے ۔4 ۔ متلہ ہوتی ہے اور کھانے کی خوشبو بھی اچھی نہیں لگتی ۔5 ۔بعض اوقات ایک دم شدید درد ہو جاتا ہے ۔ٹیسٹ (Test)پتے کا الٹرا ساؤنڈ کروا کے خون کا C.B.C کروانا چاہیے جس میں سفید سیلز اور خون میں E.S.R کا لیول زیادہ ہوتا ہے ۔کولیسٹرول کا لیول بھی اکثر اوقات زیادہ ہوا کرتا ہے ۔
لبلبے کی سوزش (PANCREATITIS)
تعریف: Definition ۔لبلبے کی سوزش کو ’’ پین کرے ٹایٹس ‘‘ کہتے ہیں ۔لبلبے کی یہ سوزش اکیوٹ (ماد)اور کرناک (مزمن )دونوں طرح کی ہو سکتی ہے ۔اکیوٹ ’’پین کرے ٹائی ٹس ‘‘ کی علامات ۔
1 ۔ یہ تکلیف عموماً پتے کی پتھریاں یا کثرت شراب نوشی کی وجہ سے لاحق ہوتی ہے ۔2 ۔ معدے کے منہ پر شدید درد ہوتا ہے ۔یہ درد کمر تک جانے لگتا ہے 3 ۔ متلی اور قے ہوتی ہے 4 ۔ درد پورے شکم میں پھیل جاتا ہے یا پھیل سکتا ہے 5 ۔ آگے جھکنے پر آرام معلوم ہوتا ہے لیٹنے پر تکلیف زیادہ وہ جاتی ہے 6 ۔ مریض ڈرا ہوا ہوتا ہے7 ۔ نبض تیز ہوجاتی ہے 8 ۔ بلڈ پریشر کم ہو جاتا ہے 9 جسم میں پانی پڑنے لگتا ہے 10 ۔ درد کی صورت میں شکم تنا ہوا نہیں ہوتا بلکہ نرم ہی رہتا ہے ۔11 ۔آنتوں کی آواز جسے(Bowel Sounds)کم ہو جاتی ہے ۔بلکہ ختم ہو جاتی ہے ۔تشخیص (Investigation)1۔ خون میں کیلشم کا لیول کم ہو سکتا ہے 2 ۔درد کے شروع شروع بلڈ پریشر گر جاتا ہے 3 ۔سادہ ایکس رے کروانے پر معلومات حاصل ہوتی ہے 4 ۔الٹرا ساؤنڈ کروانے پر لبلبے کی کیفیت دیکھی جاتی ہے 5۔خون میں سفید سیلز کی تعداد بڑھ جاتی ہے 6 ۔ ان میں امائی لیز (Amylase)کا لیول بڑھ جاتا ہے اور یہ ایک سے تین دنوں تک بڑھا رہتا ہے ۔7۔ اسکین کروانے پر تشخیص میں مدد مِل جاتی ہے ۔کرانک ’’پین کریٹائی ٹس ‘‘ کی علامات : Symptoms
1 ۔ مریض دیکھنے میں خوراک کی کمی کا شکار معلوم ہوتا ہے 2 ۔شکم پر ہلکا سا تناؤ معلوم ہوتا ہے 3 شراب نوشی کرنے سے تکلیف ہو جاتی ہے 4 ۔ کھانا کھانے سے تکلیف ہو جاتی ہے 5۔ درد آہستہ آہستہ شروع ہو کر بعض اوقات ہفتوں تک جاری رہتا ہے 6.درد کمر تک جا سکتا ہے7۔آگے جھکنے سے درد میں کمی ہو جاتی ہے 8۔گیس خارج کرنے والی دواؤں سے درد کو فائدہ نہیں ہوتا 9 ۔بعض مریضوں کو زیابطیس کا عارضہ ہوتا ہے اس کرانک تکلیف کے باعث اور اس طرح مریض کمی غذائیت کا شکار دکھائی دیتا ہے 10 ۔بعض اوقات یرقان ہو جاتا ہے.
تشخیص (Diagnosis)1 ۔ خون میں مائی لیز (Amylase)کا لیول نارمل رہتا ہے ۔Amylase ایک Enzyme کا نام ہے ۔2۔کئی مریضوں میں سادہ ایکسرے کروانے پر چونے کے ذرات دکھائی دیتے ہیں اِن ذرات کو Calcification کہتے ہیں ۔(میڈیکل کی زبان میں )۔3 ۔الٹرا ساؤنڈ یا سی ٹی اسکین کروانے پر لبلبے کی حالت دیکھی جا سکتی ہے جس میں لبلبے کیا نالیوں وغیرہ اور تمام ساخت کو دیکھا جا تا ہے۔مثلاً لبلبے کا پھیل جانا ،نالیوں کی بندش ،لبلبے کا سکڑنا (اٹروفی) لبلبے کیو رسولی وغیرہ کیونکہ کرانک لبلبہ میں یہ چیزیں ہو سکتی ہیں ۔4 ۔بعض لوگوں میں شوگر لیول ،بلی روبن وغیرہ کا لیول بڑھ جاتا ہے ۔لبلبہ کا کینسر :Cancer of the Pancereas
1 ۔ اگر لبلبے کا کینسر ہو جائے تو معدے کے منہ پر درد ہوتا ہے اور یہ درد کمر تک جاتا ہے 2 ۔ مریض کی بھوک بہت گِر جاتی ہے اور وزن گِر جاتا ہے3 ۔لبلبے پر رسولی ’’گو مڑ‘‘ کینسر وغیرہ کو دیکھنے کے لئے الٹرا ساؤنڈ یا سی ٹی سکین بہت ضروری ہوتا ہے ۔اس کی وجہ سے لبلبے کی کیفیت معلوم کی جا سکتی ہے ۔


Comments

comments