پڑھتاجا۔۔شرماتاجا۔۔ ایبٹ آباد کے شہریوں کیلئے لمحہ فکریہ۔


ایبٹ آباد:ایبٹ آباد کے اراکین اسمبلی سوشل میڈیا پر عوام کو بیوقوف بنانے میں مصروف ۔بائی پاس، ماڈل اسکول، ٹراماسنٹر، سی اینڈ ڈبلیوکے ساٹھ فیصد فنڈز کے علاوہ یوسف ایوب خان ایبٹ آباد کو ملنے والی پاک آسٹریلیا انسٹیٹیوٹ آف اپلائیڈ سائنسز بھی لے اڑا۔ اس ضمن میں مقامی ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ ایبٹ آباد کے اراکین اسمبلی دودوصوبائی وزارتیں رکھنے کے باوجود بھی ناکام و نامراد رہے۔ ہری پور سے تعلق رکھنے والے سابق صوبائی وزیر یوسف ایوب خان ایک شرارتی بچے کی طرح ایبٹ آباد کے اراکین اسمبلی سے کروڑوں روپے مالیت کے منصوبے چھین کر ہری پور لے جاتا رہا۔ لیکن ایبٹ آباد کے اراکین اسمبلی ٹس سے مس نہیں ہوئے اور سوشل میڈیا پر اپنی جھوٹی کارکردگی کے قصے پھیلانے میں مصروف رہے۔ ذرائع کے مطابق یوسف ایوب خان نے سب سے پہلے ایبٹ آباد کو ملنے والے بائی پاس کو ہری پور منتقل کرلیا۔ ہری پور میں اس بائی پاس کا کام آخری مراحل میں ہے۔

اس کے علاوہ یوسف ایوب خان ایک کروڑ روپے مالیت کا ماڈل اسکول بھی ایبٹ آباد سے ہری پور چھین کر لے گیا۔ لیکن ایبٹ آباد کے عوامی حقوق کے محافظ سوئے رہے۔ اس کے علاوہ ڈی ایچ کیو ہسپتال ایبٹ آباد کو ملنے والا ٹراما سنٹربھی یوسف ایوب خان ہری پور لے گیا۔ جہاں ڈی ایچ کیو ہسپتال میں ٹراما سنٹر کا افتتاح بھی کردیا گیاہے۔ یوسف ایوب خان نے اسی پر بس نہیں کی۔ بلکہ سی اینڈ ڈبلیو کو ملنے والے ساٹھ فیصد فنڈز بھی ہری پور منتقل کرلئے گئے۔ لیکن ایبٹ آباد کے منتخب نمائندوں کو ہوش نہیں آیا۔ ذرائع کے مطابق گزشتہ سال آسٹریلین حکومت نے ایبٹ آباد کیلئے پاک آسٹریلیا انسٹیٹیوٹ آف اپلائیڈ سائنسز کی منظوری دی۔ اور یہ ادارہ ایبٹ آباد میں بنناتھا۔ لیکن ایبٹ آباد کے نااہل منتخب نمائندوں کی وجہ سے یہ ادارہ بھی یوسف ایوب خان ہری پور لے گیا۔ اور ہری پور کے نواحی علاقے منگ میں اس کا تعمیراتی کام تیزی سے جاری ہے۔اس ادارے میں ٹیکنیکل کورسز جن میں سافٹ ویئرانجینئرنگ، ماحولیاتی انجینئرنگ اور ملٹی میڈیا ٹیکنالوجی کی درس وتدریس کی کی جائے۔ یہ ادارہ بھی ایبٹ آباد سے چھین لیا گیاہے۔ اس ادارے میں یورپین سٹینڈرڈ کے مطابق انتہائی کم اخراجات پر طلباء کو تعلیم دی جائے گی۔


Comments

comments