پی ٹی آئی حکومت کے آخری ایام ایبٹ آباد میں درجہ چہارم ملازمتوں کی منڈی لگ گئی ۔ سرکاری محکموں کے ذمہ داران کے حق میں صرف بدنامی،گالیاں اور بدعائیں جبکہ اس مال وزربھتہ کی صورت میں ایم پی ایز کے قریبی عزیز دوست راست وصول کرنے لگے ۔

محکمہ مال ایبٹ آباد کرپشن، بدعنوانی اور بے قاعدگی کی بدولت کرپشن کی منڈی میں تبدیل، انتقالات پردو فیصد، تحصیلدار کے دورے منسوخ کرکے تحصیل میں ایک فیصد اضافی ٹیکس وصولی، فرد، عکس، جمعہ بندی اور رجسٹری کرانا جان جوکھوں کا کام بن گیا۔