حلقہ این اے پندرہ میں شیرگھس گیا۔ علی اصغرخان اور سردار یعقوب کی کشتیاں ڈوب گئیں۔


ایبٹ آباد:حلقہ این اے پندرہ کاغیرمتوقع نتیجہ۔ علی اصغرخان اور سردار یعقوب کی کشتیاں ڈوب گئیں۔ذرائع کے مطابق ریٹرننگ آفیسرایبٹ آباد کی جانب سے جاری کئے جانیوالے غیرحتمی نتائج کے مطابق حلقہ این اے پندرہ میں 449پولنگ سٹیشنوں پررجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد478336ہے اور241840 خواتین و مرد ووٹرزنے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا۔234135ووٹ درست جبکہ 7705ووٹ مسترد کئے گئے۔ ووٹنگ کی شرح 50.56 فیصد رہی۔

ریٹرننگ آفیسر کی جانب سے جاری کئے جانیوالے نتائج کے مطابق پاکستان راہ حق پارٹی کے امیدوار ایاز خان جدون نے 2307، پاکستان جسٹس اینڈ ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوارثمین ریاض عباسی نے 818، آزادامیدوار ذوالفقار جاوید نے 218، آزادامیدوار سردار گوہر زمان خان نے 5005، قومی وطن پارٹی کے امیدوار سردار محمد اقبال خان نے 1788، پی ٹی آئی کے منحرف سردار محمد یعقوب نے 30298، پی پی پی پی کے سردار منظور ممتاز عباسی نے 1007، پاکستان تحریک انصاف کے علی اصغرخان نے 81845، ایم ایم اے کے فضل الرحمن نے 7253، آزاد امیدوار محمد اصغرشاہ نے 1024، تحریک لبیک پاکستان کے مخدوم عارف حسین شاہ کاظمی نے 6848 اور پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرتضیٰ جاوید عباسی نے 95346 ووٹ حاصل کئے۔ واضح رہے کہ حلقہ این اے پندرہ کا نتیجہ بھی غیرمتوقع رہا۔ اس حلقے میں الیکشن سے قبل سب لوگوں کا کہناتھاکہ یہ سیٹ سردار محمد یعقوب باآسانی نکال لیں گے۔ لیکن سردار محمد یعقوب کو عوام نے تیسرے نمبر پر دھکیل دیا۔ جبکہ دوسری جانب پی ٹی آئی کے امیدوار علی اصغرخان تیسری مرتبہ الیکشن ہار گئے ہیں۔ جس کی بنیادی وجہ غلط حلقے کا انتخاب اور کمزور انتخابی مہم ہے۔ کیونکہ اس حلقے میں علی اصغرخان کا کوئی بھی ذاتی ووٹ بنک نہیں ہے اور علی اصغرخان صرف پی ٹی آئی پر اکتفاء کئے ہوئے تھے۔ اگر پی ٹی آئی کا ٹکٹ کڑلال برادری کے کسی امیدوار کو مل جاتا تو پاکستان مسلم لیگ(ن) کسی صورت یہ نشست نہیں جیت سکتی تھی۔


Comments

comments