ایبٹ آباد میں سی ٹی ڈی کے دفاتر کاتعمیراتی کام شروع کردیاگیا۔


ایبٹ آباد:انسداد دہشتگردی ہزارہ پولیس کے دفاتر کیلئے چھ کنال اراضی پر تعمیراتی کام شروع کر دیا گیا ہے صوبائی حکومت نے صوبے میں دہشتگردی کے خاتمے کیلئے 2013میں بنائے گئے ایکٹ کے تحت صوبے کے ہر ڈویژنل میں سی ٹی ڈی پولیس کا تھانے بنانے کی منظوری دی تھی اور اس کی فنڈنگ بھی صوبائی حکومت نے کی تھی جس کے تحت ہزارہ ڈویژن انسداد دہشتگردی پولیس کے تھانے کی تعمیر کیلئے چھ کنال اراضی پولیس لائن ایبٹ آباد کے ساتھ مختص کی گئی تھی جس پر تعمیراتی کام شروع کر دیا گیا ہے اور مذکورہ بلڈنگ کی تعمیر کی زد میں آنے والے چیڑ سمیت دیگر پانچ درختوں کی کٹائی کیلئے محکمہ فارسٹ سے منظوری اور باقاعدہ نیلامی کر دی گئی ہے ۔

کٹائی سے قبل محکمہ فارسٹ گلیز ڈویژن کے اہلکاروں نے مذکورہ درختوں کی باقاعدہ پیمائش کر کے اس کا تخمینہ لاگت لگا کر نیلامی کیلئے بولی کی رقم مختص کی تھی بولی کے لیئے باقاعدہ مقامی اخبارات میں اشتہار دیا گیا تھا اور محکمہ فارسٹ کی جانب سے مقرر کی گئی بولی سے کہیں زیادہ بولی پر مذکورہ درخت نیلام کئے گئے جس میں مختلف پارٹیوں نے حصہ لیا تھا مذکورہ تھانے کی باؤنڈری وال اور بلڈنگ کی تعمیر کی راہ میں آڑے آنے والے درختوں کو قانونی تقاضوں کے مطابق نیلام کیا گیا انسداد دہشتگردی تھانہ کی تعمیر سے نہ صرف سٹاف کو بیٹھنے اور کام کرنے کی جگہ ملے گی بلکہ ہزارہ میں دہشتگردی کے کنٹرول میں بھی یہ تھانہ معاون ثابت ہو گا اور اس کے مثبت نتائج برآمد ہوں گے


Comments

comments