فیس بک پر تصویرکے تنازعہ پر کاغان کالونی میں پولیس اہلکار قتل۔


ایبٹ آباد:فیس بک پر تصویرکے تنازعہ پر کاغان کالونی میں پولیس اہلکار قتل۔ ایک مبینہ حملہ آورشدیدزخمی۔ اس ضمن میں ڈی ایس پی میرپور سرکل امجد حسین نے صحافیوں کو بتایاکہ مظہرمنیر ولد منیر احمد پولیس میں بحیثیت کانسٹیبل خدمات سرانجام دے رہاتھا اورآج کل وہ تھانہ سٹی میں تعینات تھا۔ پولیس کانسٹیبل مظہر منیر کا کزن حمزہ تنولی جوکہ ملکپورہ کا رہائشی ہے۔ حمزہ تنولی نے ایک متنازعہ تصویر اپنی فیس بک پر لگائی۔ جس پر پیر کے روز حمزہ تنولی کے گھر پر چڑھائی کی گئی اورجھگڑا بھی ہوا۔ 

تاہم پیر کی شام پولیس کانسٹیبل مظہر کاغان کالونی گلی نمبرایک میں موجود تھاکہ نجی اسکول کے سیکنڈ ایئر کے طالبعلم منیر، ولد سکنہ جناح آباد، احتشام شاہ سکنہ سپلائی، زین ولد نامعلوم اور لکی سکنہ سٹریٹ نمبر۱ کاغان کالونی نے اس پر حملہ کردیا۔ جھگڑے کے دوران حملہ آوروں نے پولیس کانسٹیبل مظہر پر فائرنگ کی جبکہ مظہر نے بھی جوابی فائرنگ کی۔ دوطرفہ فائرنگ کے دوران ایک گولی مظہر کے سینے میں لگی جس سے وہ موقع پر ہی مارا گیا۔ جبکہ مظہر کی فائرنگ سے حارث ولد عبدالحفیظ سکنہ شاہنواز چوک مانسہرہ بھی گولیاں لگنے سے شدیدزخمی ہوگیا۔ جھگڑے کے بعد حملہ آور موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ مقتول پولیس اہلکار مظہر اورزخمی حارث کوایوب ٹیچنگ ہسپتال منتقل کیاگیا۔ جہاں حارث کی حالت انتہائی تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ ڈی ایس پی کے مطابق تفتیش کے بعد ہی مکمل حقائق کے بارے میں بتایاجائے گا۔ مقتول پولیس اہلکار مظہر کی لاش پوسٹمارٹم کے بعد ورثاء کے حوالے کردی گئی ہے۔ تھانہ میرپور میں مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔


Comments

comments