کرپشن کابے تاج بادشاہ امجدشیخ دوبارہ ایبٹ آباد میں تعینات۔


ایبٹ آباد:صاف چلی شفاف چلی کرپشن و کمیشن خوری خاتمہ کی دعویدار پی ٹی آئی حکومت اور منتخب ارکان نے کمیشن فوری میں ملوث افسران کو نوازنے کی پالیسی اپنا لی رشوت خوری رنگے ہاتھوں دوبارہ گرفتار ہونیوالے اور تحصیل حکومت کے احتجاج پر تبدیل ہونے والے کرپٹ ٹی او آئی امجد شیخ کو دوبارہ ایبٹ آباد ٹی ایم اے میں لانے کیلئے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ کو نادر شاہی حکم جاری کر دیا گیا ۔

ذرائع کے مطابق ایبٹ آباد ٹی ایم اے میں تعینات ایکسین TOI امجد شیخ کی شہر کی بیوٹیفکیشن اور تحصیل ممبران کے فنڈز میں ٹھیکیداروں سے گٹھ جوڑ کر کے کمیشن خوری وصول کرنے کیخلاف تحصیل حکومت نے صدائے احتجاج بلند کی اور تحصیل ناظم نے امجد شیخ کیخلاف ڈی جی نیب کو کارروائی کیلئے تحریراً آگاہ کیا جبکہ موصوف آفیسر کو دو مرتبہ انٹی کرپشن پولیس نے گرفتار کر کے جیل یاترا بھی کرایا اور عوامی احتجاج پر تبدیل کئے جانے والے آفیسر کو دوبارہ پی ٹی آئی حکومت اور منتخب نمائندے ایبٹ آباد ٹی ایم اے میں لانے کے درپے ہیں اس ضمن میں ٹھیکیداروں نے بھی ڈی جی نیب کو درخواست دے رکھی ہے جبکہ تحصیل ممبران نے خبردار کیا کہ اگر کرپٹ آفیسر کو دوبارہ تعینات کیا گیا تو خاموش نہیں رہیں گے ۔

اس ضمن میں ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ مانسہرہ این اے 21 کے ترقیاتی منصوبہ جات میں خرد برد پر نیب پشاور نے انکوائری کر کے ریفرنس دائر کیا جو کہ احتساب عدالت نمبر 4 میں زیر سماعت ہے اسی طرح انٹی کرپشن میں بھی مقدمات زیر سماعت ہیں ۔ کرپشن و بد عنوانیوں کے بے تاج بادشاہ آفیسر نے ہزارہ کے متعدد سیاستدانوں اور بیورو کریٹ سے مراسم بڑھا کر اپنے گناہوں پر پردہ ڈال رہے ہیں جن کے عوض انہیں بھی رام کرتے ہوئے انہیں بھی حصہ دار بنا رکھا ہے تحیصل کونسل ممبران ٹھیکیدار برادری اور سنجیدہ شہری حلقوں نے انٹی کرپشن نیب سے تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے انصاف کی داعی حکومت اور ان کے منتخب نمائندوں کرپٹ آفیسر کی پشت پناہی کرنے پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے دوبارہ دما دم مست قلندر کا عندیہ دیدیا ہے ۔


Comments

comments