ڈپٹی ڈائریکٹرفشریز ڈاکٹرتنویر کوایبٹ آباد میں قتل کردیاگیا۔ 


ایبٹ آباد:ڈپٹی ڈائریکٹرفشریز ڈاکٹرتنویر کوگولیاں مار کرقتل کردیاگیا۔ اس ضمن میں پولیس اور مقامی ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ تھانہ مانگل کی حدود میں واقع گاؤں سجی کوٹ کے رہائشی ڈاکٹر تنویر جنہوں نے پی ایچ ڈی بھی کیاہواتھا اور آج کل وہ بحیثیت ڈپٹی ڈائریکٹر خیبرپختونخواہ محکمہ فشریز میں خدمات سرانجام دے رہے تھے۔ ہفتہ کے روز ڈاکٹرتنویر اپنے والد منور کی برسی کے موقع پر ان کے مزار پر چادر چڑھانے گئے۔ جہاں پر پہلے سے موجودمحبوب ولد نامعلوم ساکنہ کرہکی،اللہ داد ولد محمد حسن،علی مردان ولد فقیر محمد،فیصل ولد سردار محمد،نوید ولد اللہ داد،ممتاز ولد غلام ربانی اورگوہرارحمان ولد علی فرمان ساکنان سجی کوٹ نے ان سے کہاکہ وہ مزار کو ختم کردیں۔ جس پر توں تکرار شروع ہوئی۔

ذرائع کے مطابق نامزد ملزمان نے اندھادھند فائرنگ کرکے ڈاکٹر تنویر کو قتل کردیا اور موقع سے فرار ہوگئے۔ واقع کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی نفری موقع پر پہنچ گئی اور لاش کو قبضے میں لیکر پوسٹمارٹم کیلئے ایوب ٹیچنگ ہسپتال منتقل کردیا۔ تھانہ مانگل میں ملزمان کیخلاف قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیاہے۔ جبکہ ڈاکٹرتنویر کو آج بروز اتوار سپرد خاک کیاجائے گا۔


Comments

comments