ہرنومیں لگے جھولے بارشی پانی میں بہہ گئے۔ گائنی پیڈزیونٹ میں پانی داخل۔


ہرنومیں لگے جھولے بارشی پانی میں بہہ گئے۔ متعدد افراد کو بچالیاگیا۔

ایبٹ آباد:سپریم کورٹ کے احکامات کی خلاف ورزی۔ ہرنومیں لگے جھولے بارشی پانی میں بہہ گئے۔ متعدد افراد کو بچالیاگیا۔ اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے واضح احکامات جاری کئے گئے ہیں کہ آبی کی گزرگاہوں سے کم از کم تین سو میٹردور تعمیرات کی جائیں۔ گزشتہ دس سالوں میں ٹی ایم اے اور جی ڈی اے کے کرپٹ اہلکاروں کی وجہ سے ایبٹ آباد کے سیاحتی مقام ہرنو میں نہ صرف پانی کے گزرنے والی دوڑ میں پختہ تعمیرات کرلی گئی ہیں۔ بلکہ وہاں پر جھولے بھی لگادیئے گئے ہیں۔ مشرقی سمت پانی کا رخ تبدیل کرکے کئی ہوٹل تعمیر کرلئے گئے ہیں۔ جبکہ مغربی سمت میں بھی ہوٹلوں کے علاوہ کئی پلازے بھی پانی گزرنے والی جگہ پر بنا لئے گئے ہیں۔ پیر اور منگل کی درمیانی شب ایبٹ آباد خصوصاً گلیات میں ہونیوالی طوفانی بارشوں کی وجہ سے پانی کا بڑا ریلا ہرنو سے گزرا۔ جس کے نتیجے میں ہرنو میں لگے تمام جہازی سائز جھولے پانی میں بہہ گئے۔جبکہ متعدد افراد پانی میں بہہ گئے۔ جنہیں بمشکل بچالیاگیا۔ ایبٹ آباد کے شہریوں نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیاہے کہ سپریم کورٹ کے احکامات کی روشنی میں آبی گزرگاہوں میں تعمیرات فوری طور پر مسمار کی جائیں۔ اور ان تفریحی مقامات پر جو جھولے لگائے ہیں۔ وہ بھی فوری طور پر ہٹائے جائیں۔ بارشوں کے دوران ان جھولوں اور تعمیرات کی وجہ سے انسانی جانوں کو شدید خطرات لاحق ہو چکے ہیں۔

ایوب ٹیچنگ ہسپتال کے گائنی پیڈزیونٹ میں پانی داخل۔ کروڑوں کی ادویات خراب۔

ایبٹ آباد:ایوب ٹیچنگ ہسپتال کے گائنی پیڈزیونٹ میں پانی داخل۔ کروڑوں کی ادویات خراب۔ مریض پریشانی کا شکار۔ اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ عوامی نیشنل پارٹی کے دور حکومت میں سابق چیف ایگزیکٹو نعیم شہزاد کی کوششوں سے تعمیر ہونیوالے گائنی پیڈز یونٹ اورڈینٹل کالج کی تعمیر کا ٹھیکہ اس وقت کے وزیر صحت ظاہرشاہ کے قریبی عزیز کے پاس تھا۔ اس وقت بھی مقامی میڈیا میں ان دونوں یونٹس کے تعمیراتی کام کو غیرمعیاری قرار دیاگیا۔ لیکن اس ملک میں رشوت کا بازار اس قدر گرم ہے کہ نیب، اینٹی کرپشن سمیت کسی بھی ادارے نے ان تعمیرات کی انکوائری کرنا گوارہ نہیں کیں۔

پی ٹی آئی کے گزشتہ دور حکومت کے آخری مہینوں میں گائنی پیڈز یونٹ کو فعال کردیاگیا۔ تاہم پیر اورمنگل کی درمیانی شب ہونے والی تباہ کن بارشوں سے تمام پانی گائنی پیڈ ز یونٹ میں گھس گیا۔ جس کے نتیجے میں تمام گائنی اور پیڈز وارڈ میں پانی کھڑارہا۔ جبکہ اس یونٹ کی بیسمنٹ میں ادویات کے سٹور بھی بنائے گئے ہیں۔ بارشوں کا پانی ادویات کے سٹور میں بھی گھس گیا۔ ذرائع کے مطابق ہسپتال کے اسٹورز میں موجود کروڑوں روپے کی ادویات بھی خراب ہوگئیں۔


Comments

comments