رمضان المبارک میں ڈاکٹروں نے انسانیت کو شرما کررکھ دیا۔ ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں مکمل ہڑتال۔ اوپی ڈیز کو تالے۔


ایبٹ آباد:رمضان المبارک میں ڈاکٹروں نے انسانیت کو شرما کررکھ دیا۔ ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں مکمل ہڑتال۔ اوپی ڈیز کو تالے۔ مریضوں کو وارڈوں سے نکالنے کی کوشش۔ ہزارہ بھر کے شہریوں کا احتجاج۔اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ صوبائی وزیر صحت کے سیکورٹی عملے کی جانب سے خیبرٹیچنگ ہسپتال پشاور اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹرضیاء الدین کو تشدد کا نشانہ بنایاگیا۔ جس کیخلاف پورے صوبے میں ڈاکٹروں نے رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں انسانیت کو شرما کر رکھ دیا۔

ایبٹ آباد کے ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں ڈاکٹروں نے ماسوائے ایمرجنسی سروسز کے تمام اوپی ڈیز کو تالے لگادیئے۔ مریضوں کو وارڈز سے نکالنے کی کوشش کی۔ ہسپتال میں روزے کی حالت میں ایسی ایسی کارروائیاں کیں کہ جن کو دیکھ کر انسانیت بھی شرما گئی۔ ایوب ٹیچنگ ہسپتال کے ڈاکٹروں نے ہزارہ ڈویژن اور شمالی علاقہ جات سے علاج معالجے کیلئے آنیوالے سینکڑوں مریضوں کا علاج کرنے سے انکار کردیا۔ اور مریض رمضان المبارک کے مقدس مہینے میں ڈاکٹروں کو بدعائیں دیتے ہوئے بے بسی کے عالم میں واپس روانہ ہوگئے۔

ڈاکٹروں کی ہڑتال کی وجہ سے سینکڑوں آپریشن ملتوی کردیئے گئے۔ شہریوں نے ایوب ٹیچنگ ہسپتال کے ڈاکٹروں کی ہڑتال کو غیرقانونی اور غیراخلاقی قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ احتجاج کے اور بھی بہت سے طریقے ہیں۔ ایوب ٹیچنگ ہسپتال کے ڈاکٹروں کو رمضان المبارک جیسے مقدس مہینے میں نیکیاں کمانی چاہئیں۔ شہریوں نے صوبائی حکومت سے ہڑتال کرنیوالے ڈاکٹروں کیخلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیاہے۔

gif


Comments

comments