بارہ سالہ لڑکوں کی آٹھ سالہ بچی کیساتھ اجتماعی زیادتی۔ 


ایبٹ آباد:بارہ سالہ لڑکوں کی آٹھ سالہ بچی کیساتھ اجتماعی زیادتی۔ بچی کی حالت غیر۔ دونوں ملزمان گرفتار۔ اس ضمن میں پولس ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ تھانہ کاغان کی حدود میں بارہ سالہ اویس ولد لیاقت اوربارہ سالہ یاسر ولد گل زمان نے اپنے گاؤں کی ایک آٹھ سالہ بچی کو بھلا پھسلا کر ایک ویران مقام پر لے گئے۔ جہاں دونوں نے باری باری بچی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ اور بچی کی حالت غیرہونے پر اسے چھوڑ کر فرار ہوگئے۔ بچی کے والدین کی رپورٹ پر تھانہ کاغان میں دونوں بچوں کیخلاف زناء بالجبر کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیاگیاہے۔ جبکہ تھانہ کاغان کے ایس ایچ او انس خان نے کارروائی کرتے ہوئے دونوں لڑکوں کو گرفتار کرلیاہے۔

واضح رہے کہ ملک میں بے راہ روی کی بڑی وجہ موبائل فون کی ٹیکنالوجی ہے۔ ملک کے طول و عرض میں موبائل کمپنیوں کا پھیلایا جانیوالا نیٹ ورک نوجوان نسل کو بے راہ روی کی جانب مائل کررہاہے۔ جس کی وجہ سے آج کل کے اکثریتی نوجوان اٹھتے بیٹھتے موبائل فون پر گندی فلمیں اور وٹس ایپ پر آنیوالے کلپ دیکھتے رہتے ہیں۔ ہماری حکومت اور علماء کرام اس چیز کی روک تھام میں ناکام ہیں۔ یہودی پالیسی سازوں نے علماء کو سیاست اور پکڑدھکڑ میں مصروف کررکھا ہے۔ جبکہ قانون نافذ کرنیوالے ادارے دہشت گردی سے نمٹنے میں مصروف ہیں ۔ ایسے میں پاکستانی نوجوان نسل تباہی کی طرف جارہی ہے۔ جس کی کوئی روک تھام نہیں ہے۔


Comments

comments