بھتہ خورانتظامیہ کی وجہ سے ایبٹ آباد میں سی این جی اورپٹرول مہنگافروخت کیاجارہاہے: امجدشاہزمان۔


ایبٹ آباد:سابق امیدوار صوبائی اسمبلی امجدشاہزمان نے کہاہے کہ ایبٹ آباد میں دس روپے کلو مہنگی سی این جی کی فروخت انتظامیہ کی بھتہ خوری کا نتیجہ ہے۔ متعلقہ ادارے بھتہ لے رہے ہیں۔ جبکہ شہری دونوں ہاتھوں سے لٹ رہے ہیں۔ ایبٹ آباد میں پٹرولیم مصنوعات بھی پچاس پیسے زائد قیمتوں پر فروخت کی جارہی ہیں۔ صحافیوں سے بات چیت کے دوران امجدشاہزمان کا کہناتھاکہ ہری پور میں سی این جی 108روپے کلو فروخت کی جارہی ہے۔ جبکہ ایبٹ آباد میں سی این جی 118روپے میں فروخت کی جارہی ہے۔ اسی طرح ہری پور میں پٹرول 93.75روپے لیٹر فروخت کیاجاتاہے۔ جبکہ ایبٹ آباد میں پٹرول 94.30پیسے میں فروخت کیاجارہاہے۔ ضلعی انتظامیہ اور متعلقہ اداروں کی بھتہ خوری کی وجہ سے سی این جی مافیا اور پٹرول پمپ کے مالکان عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہے ہیں۔

امجدشاہزمان کا کہناتھاکہ ہری پور میں یوسف ایوب اور بابر خان جیسے سیاستدانوں کی وجہ سے کسی میں جرأت نہیں کہ وہ زائد قیمتیں وصول کرسکے۔ لیکن ایبٹ آباد میں مشتاق غنی جیسے سیاستدانوں کی وجہ سے شہریوں کا برا حال ہے۔ جو نہ تین میں ہیں نہ تیرہ میں۔ ضلعی انتظامیہ کے افسران ، کنزیومر پروٹیکشن والے تمام اداروں سے بھتے لے رہے ہیں۔ قیمتوں کو چیک کرنے کیلئے کوئی نظام موجود نہیں ہے۔ امجد شاہزمان نے دھمکی دی کہ اگر ایبٹ آباد میں سی این جی اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو ہری پور کے برابر نہیں کیاگیا تو انتظامیہ کیخلاف ایسا احتجاج کیاجائے گاکہ رہتی دنیا اسے کو یاد رکھے گی۔


Comments

comments