نشہ آور مشروب پلاکرزیادتی کرنیوالا اپنے منطقی انجام کو پہنچ گیا۔


ایبٹ آباد:افغانی لڑکے کو بدفعلی کا نشانہ بنانیوالا اپنے منطقی انجام کو پہنچ گیا۔ گولیوں سے چھلنی لاش برآمد۔ اس ضمن میں پولیس اور مقامی ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ سلطانپور حویلیاں کارہائشی واجد خان ولد منصف خان چمبہ کے قریب ایک بلاک بنانیوالی فیکٹری کا انچارج اورغیرشادی شدہ ہے۔ واجد خان کے بارے میں بتایاگیاہے کہ وہ چرس وغیرہ بھی پیتاتھا اور اکثر اوقات خوبرو لڑکوں کیساتھ دوستی کرکے انہیں چائے وغیرہ میں نشہ آور مشروب پلا کر جنسی زیادتی کا نشانہ بھی بناتا تھا۔ بائیس سالہ خوبرو افغانی لڑکا عبدالرحیم ولد عبدالکریم زین العابدین روڈ پر سبزی کی دوکان چلاکر اپنے خاندان کی کفالت کرتا تھا۔ عبدالرحیم جوکہ انتہائی خوبصورت لڑکا ہے۔ واجد خان نے عبدالرحیم پر غلط نظر رکھی ہوئی تھی۔

مبینہ طور پر ہفتہ کی رات واجد خان عبدالرحیم کو گپ شپ لگانے کے بہانے ساتھ لے گیا۔ جہاں اس نے چائے میں نشہ آور گولیاں ملا دیں۔ چائے پینے کے بعد عبدالرحیم نیم بے ہوشی کی حالت میں چلاگیا۔ اور نیم بے ہوشی کی حالت میں واجد خان نے عبدالرحیم کیساتھ بدفعلی کی۔ جب عبدالرحیم کو ہوش آیا اور اس کو اپنے ساتھ ہونیوالے سنگین واقع کے بارے میں محسو س ہواتوعبدالرحیم کا خون کھول اٹھا۔ عبدالرحیم جوکہ ایک انتہائی نیک سیرت اچھالڑکا بتایاجاتاہے۔ عبدالرحیم کے مطابق میں نے پستول حاصل کیا اور پھر اتوار کی رات واجد خان کے گھر کے باہر پہنچ گیا۔ میں نے واجد خان کو کال کرکے باہر بلایا اور اسے بھلا پھسلا کر ندی دوڑ کی طرف لے گیا۔ جہاں اس کو اس کے کئے کی سزا دی اور اس کو گولیاں مار کرقتل کرکے فرار ہوگیا۔ پولیس کے مطابق مقتول واجد خان کے موبائل کی سی ڈی آر سے عبدالرحیم کو گرفتار کیاگیاہے۔ اور عبدالرحیم کی نشاندہی پر آلہ قتل بھی برآمد کرلیاگیاہے۔


Comments

comments