آٹھویں جماعت کے طالبعلم کو قتل کرکے لاش ویرانے میں پھینک دی گئی۔ 


ایبٹ آباد: آٹھویں جماعت کے طالبعلم کو قتل کرکے لاش ویرانے میں پھینک دی گئی۔ کونسلراورخاتون کیخلاف مقدمہ درج۔ اس ضمن میں پولیس ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ تھانہ شیروان کی حدود میں واقع گاؤں حبیب آباد کے رہائشی بشیر کی بکریاں وغیرہ گم ہوگئیں۔ جن کی تلاش کیلئے بشیر نے اپنے بیٹے حمزہ اور آٹھ سالہ بھانجے کو بکریوں کی تلاش کیلئے بھیجا۔ بکریاں مقامی کونسلر جہانگیر کے کھیتوں میں گھس گئی تھیں۔ جب حمزہ اور اس کا کزن بکریوں کو گھرلے جانے لگے تو مقامی کونسلر جہانگیر نے بچوں کو گالیاں دیں اورآٹھ سالہ بچے کو پکڑلیا۔ جبکہ حمزہ ڈر کی وجہ سے فرار ہوگیا۔ بعد میں کونسلر جہانگیر نے آٹھ سالہ بچے کو بھی چھوڑ دیا۔

پانچ گھنٹوں تک جب حمزہ واپس گھر نہ پہنچا تو اس کے گھر والوں کو فکر ہوئی۔ جب حمزہ کے لواحقین کونسلر جہانگیر کی اراضی میں گئے تووہاں پر حمزہ کی لاش پڑی ہوئی تھی۔ اورجسم کے مختلف حصوں پر زخموں کی نشانات تھے۔ جس کی اطلاع پولیس کو دی گئی۔ایس ایچ او شیروان نے موقع پر پہنچ کر لاش کو قبضے میں لیکر پوسٹمارٹم کیلئے ڈی ایچ کیوہسپتال منتقل کردیا۔ مقتول حمزہ کے لواحقین کی رپورٹ پر کونسلر جہانگیر اور ساجدہ نامی عورت کیخلاف قتل کا مقدمہ درج کرلیاگیاہے۔ واضح رہے کہ حمزہ مقامی اسکول میں آٹھویں جماعت کا طالبعلم تھا۔

gif

gif


Comments

comments