ضلع ایبٹ آباد کی نئی حلقہ بندیوں کی حتمی تفصیلات جاری۔ حلقہ پی کے چھیالیس کا خاتمہ۔


ایبٹ آباد:ضلع ایبٹ آباد کی نئی حلقہ بندیوں کی مجوزہ ترامیم منظرعام پر آگئیں۔حلقہ پی کے چھیالیس کا خاتمہ۔ میرپور اوردہمتوڑ کوگلیات کے حلقوں کیساتھ منسلک کردیاگیا۔لوئرتناول کی تمام یونین کونسلیں کو پی کے سینتالیس کے ساتھ جوڑ دیاگیا۔ نئی حلقہ بندیوں کے بعد حلقہ پی کے چوالیس میں الیکشن میں گھمسان کا رن پڑنے کاامکان۔
الیکشن کمیشن کے ذرائع کے مطابق نئی حلقہ بندیوں کے مطابق ضلع ایبٹ آباد کی کل آبادی 1332912، تحصیل ایبٹ آباد کی کل آبادی 981590، تحصیل حویلیاں کی کل آبادی 351322نفوس پر مشتمل ہے۔ ضلع ایبٹ آباد کی اس آبادی کو تین صوبائی حلقوں میں تبدیل کرکے فی حلقہ 333,228نفوس پر تقسیم کیاگیاہے۔

صوبائی حلقہ ون کے ڈرافٹ کے مطابق حلقہ ون کی کل آبادی 339021ہے۔ جس میں ایبٹ آباد کنٹونمنٹ کی 138311، میونسپل کمیٹی ایبٹ آباد کی 70180، ٹاؤن کمیٹی نواں شہرکی 35737، گوجری کی 15009، کاکول کی 14949، نواں شہر جنوبی کی 7951، نواں شہر شمالی کی6798، قصبہ ایبٹ آباد کی 3189، شیخ البانڈی کی 26158، یونین کونسل جھنگی کی 20764آبادی شامل ہے۔

صوبائی حلقہ ٹو کے ڈرافٹ کے مطابق حلقہ ٹو کی کل آبادی 329490نفوس پر مشتمل ہے۔ جس میںیونین کونسل میرپور کی 46206، بکوٹ کی 17466، بیروٹ کلاں کی 21101، بیروٹ خورد کی 12126، بوئی کی 9978، دلولہ کی 24560، ککمنگ کی 12117، مولیا کی 12743، نمل کی 20924، پلک کی 13275، پٹن کلاں کی14584 ، ریالہ کی 13562،سمبلی ڈھیری کی 8549، سیالکوٹ کی 14141، بالڈھیری کی19065، بانڈہ قاضی کی 30604، بانڈی ڈھونڈاں کی 27764 اور ترنوائی کی 10723نفوس پر مشتمل آبادی شامل ہے۔

صوبائی حلقہ تھری کے ڈرافٹ کے مطابق حلقہ تھری کی کل آبادی 333,795نفوس پر مشتمل ہے۔ جس میں باگن کی 11512، باغ کی 18019، بگنوترکی13862، بیرنگلی کی13067، ملاچھ کی 12861، نگری بالا کی 17235، نملی میرا کی 17851، پھلکوٹ کی 10892، سربھنہ کی 16228، گلیات کی 957، مری گلیز کینٹ کی614، چھتڑی کی 13833، دناء کی 8873، راہی کی 12630، گھمبیر کی 12942، گورینی کی 11160،نگری ٹوٹیال کی 12623، سیرغربی کی 12753، سیرشرقی کی 11415، تاجوال کی 16822، ناڑہ کی 8639، سجی کوٹ کی 15997، ستوڑہ کی 10065، مجہوہاں کی 7075، ڈنہ نورالاں کی 5800، لنگڑیال کی8773اور دہمتوڑ کی 15427کی آبادی شامل ہوگی۔

مجبوزہ نئی حلقہ بندیوں کے بعد ایبٹ آباد کے حلقہ پی کے چھیالیس کو ختم کردیاگیاہے۔ جبکہ لوئر تناول کی یونین کونسلوں کو حلقہ پی کے سینتالیس کے ساتھ منسلک کردیاگیاہے۔ گلیات کے تین حلقے پی کے پینتالیس، سینتالیس اور اڑتالیس جن کی آبادی کم تھی۔ سیاسی بنیادوں پر ان حلقوں کو بچالیاگیاہے۔ جس کا ڈائریکٹ فائدہ حکومتی جماعت کوہوگا۔ جبکہ حلقہ پی کے چوالیس کی دواہم ترین یونین کونسلوں میرپور اور دہمتوڑ کو بھی گلیات میں لگادیاگیاہے۔ جس سے صوبائی وزیر ہائرایجوکیشن مشتاق غنی کوآئندہ عام انتخابات میں بہت نقصان پہنچے گا۔ کیونکہ انہوں نے ان دونوں یونین کونسلوں میں کروڑوں کے ترقیاتی کام مکمل کروائے ہیں۔


Comments

comments