مشتاق احمد غنی کو سپیکر خیبر پختونخواہ نامزد کر دیا گیا ۔


ایبٹ آباد:خیبر پختونخواہ اسمبلی میں پی ٹی آئی کے ایبٹ آباد سے کامیاب ہونے والے امیدوار سابق صوبائی وزیر مشتاق احمد غنی کو سپیکر خیبر پختونخواہ نامزد کر دیا گیا ہے مشتاق احمد غنی نے ابتدائی تعلیم ایبٹ آباد سے حاصل کی اور انٹر گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج ایبٹ آباد سے پاس کیا جبکہ گریجویشن کی ڈگری پشاور یونیورسٹی سے حاصل کی اور ایجوکیشن (فار لرنر) کی ڈگری حاصل کی اور1979میں ریڈ کریسنٹ پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخواہ اور بعد ازاں پاکستان کے صدر رہے1994میں انہوں نے یو این میں پاکستانی نوجوانوں کی نمائندگی کی 1996میں پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی اور1997میں پی ٹی آئی کے پیلٹ فارم سے صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑاجس میں وہ ناکام رہے جس کے بعد انہوں نے2001میں ایبٹ آباد میں بلدیاتی الیکشن میں حصہ لیا اور اربن یونین کونسل کیہال سے ناظم منتخب ہوئے اور 2002میں انہوں نے مسلم لیگ ق کے پلیٹ فارم سے صوبائی اسمبلی پی ایف44سے الیکشن لڑا جس میں انہوں نے کامیابی حاصل کی اور2008کے انتخابات میں مسلم لیگ ق کے پلیٹ فارم سے پی ایف44کا الیکشن لڑا جس میں وہ ناکام ہو گئے اور 2008میں ان کی اہلیہ کو مسلم لیگ ق نے مخصوص نشست پر ایم این اے منتخب کیا اور2013میں انہوں نے تیسری مرتبہ پی ایف44سے آزاد حیثیت سے الیکشن لڑا اور بھاری اکثریت سے کامیاب ہوئے جس کے بعد انہوں نے پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کی جس پر انہیں وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ کا مشیر برائے ہائر ایجوکیشن تعینات کیا گیا اور بعد ازاں انہیں صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن کا عہدہ دے دیا گیا اور اس کے ساتھ ساتھ انہیں صوبائی وزیر اطلاعات کا قلمبندان بھی سونپا گیا موصوف نے اپنے پانچ سالوں کے دوران اسمبلی میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا قانون سازی میں بھر پور حصہ لیا اور اس کے ساتھ ساتھ ہائر ایجوکیشن کی ترقی میں نمایاں کردار ادا کیا مشتاق احمد غنی ایک سیاسی ورکر کے ساتھ ساتھ ایک سوشل ورکر اور ماہر تعلیم کے طور پر بھی نمایاں کام کئے ہیں


Comments

comments