عنبرین کو زندہ جلانیوالے مرکزی ملزم کے بھائی نے غریب ڈرائیور کو گولیاں مار کر قتل کردیا۔


ایبٹ آباد:جائیداد تنازعہ ۔تھانہ ڈونگا گلی کی حدود مکول پائیں میں عنبر ین قتل کیس کے مرکزی ملزم کے بھائی نے گولیاں مار کر غریب ڈرائیور کو قتل کردیا پولیس ملزم کے خلاف ایف آر درج کرنے سے انکاری ۔ عوام نے مری روڈ پر نعش رکھ کر احتجاجی مظاہرہ۔اس ضمن میں ذرائع نے بتایا ہے کہ تھانہ ڈونگا گلی کی حدود مکول پائیں میں جائیدادکے تنازعہ پرمکول پائیں کے مشہور قتل کیس عنبرین قتل کیس کے مرکزی ملزم منیر کے چچازار بھائی سلیم کے چھوٹے بھائی جینا نے گولیاں مار کر غریب ڈرائیور نوید کو شدید زخمی کرڈالا جسکو مقامی لوگوں نے طبی امداد کیلئے ڈی ایچ کیو اہسپتال منتقل کیا جہاں حالت تشوناک ہونے پر ڈاکٹروں نے زخمی کو ایوب میڈیکل لمپلیکس ریفر کیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے اتوار کے روز زندگی کی بازی ہار گیا۔

ذرائع کے مطابق اس ملزم نے ایک سال قبل مقتول نوید کے والد کو بھی گولیا ں مار کر زخمی کیا تھاملزم کے خلاف تھانہ ڈونگا گلی میں دس سے زیادہ ایف آئی آر بھی درج ہیں ملزم کا تعلق بااثر گھرانے سے ہے جس پر پولیس ہاتھ ڈالنے میں ناکام ہے،نوید قتل کیس میں پولیس نے مقتول کے والد سے لاکھوں روپے بھی وصول کےئے مگر ملزم کے خلاف ایف آئی آر درج نہ کرسکے ۔جس مری روڈ پر نعش رکھ کر احتجاجی مظاہرہ شروع کردیا تھا ۔مقتول نوید کی نماز جنازہ اتوار کے روز آبائی گاؤ ں مکول میں ادا کردی گئی۔

gif

gif


Comments

comments