مسلم لیگ(ن) کی جانب سے علی خان جدون کے مقابلے میں ’’حلوہ‘‘ امیدوار ۔ 


ایبٹ آباد:مسلم لیگ(ن) کی جانب سے علی خان جدون کے مقابلے میں ’’حلوہ‘‘ امیدوار ۔ مسلم لیگ(ن) کی جانب سے این اے سولہ کی سیٹ یقینی طور پر ہارنے کی امید۔ اس ضمن میں سیاسی مبصرین نے وائس آف ہزارہ کو بتایاکہ پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے سابق وفاقی وزیر امان اللہ خان جدون کے بیٹے علی خان جدون کو حلقہ این اے سولہ کیلئے امیدوار نامزد کرنے کا فیصلہ کیاگیاہے۔ علی خان جدون جوکہ تین ماہ تک ضلع ناظم بھی رہے۔ اور پچھلے کئی سالوں سے عملی طورپرسیاست میں سرگرم عمل ہیں۔ اور حلقہ پی کے انتالیس میں ان کا وسیع جنبہ اور برادری کے علاوہ موصوف کو سابق صوبائی وزراء مشتاق غنی اور قلندر خان لودھی کی بھی مکمل حمایت حاصل ہے۔ ذرائع کے مطابق سال 2017ء میں یہ باتیں گردش کررہی تھیں کہ مسلم لیگ(ن) کی جانب سے حلقہ این اے سولہ پر سردار مہتاب کے بیٹے سردار شہریار الیکشن لڑیں گے۔ لیکن حلقہ میں آج تک کسی نے سردار شہریار کو دیکھاتک نہیں اور نہ ہی سوشل میڈیا اور مقامی میڈیا میں سردار شہریار کی کبھی کوئی تصویر یاخبرتک نہیں آئی۔

سیاسی مبصرین کے مطابق سردار مہتاب جو کہ پہلے ہی حلقہ میں کوئی کام نہ کروانے کی وجہ سے اپنی سیاسی ساکھ خراب کرچکے ہیں۔ اور نئی حلقہ بندیوں نے ان کی مشکلات میں مزید اضافہ کردیاہے۔ اپنی برادری پر انحصار کرنے والے سردار مہتاب کیلئے آنیوالا وقت کسی کڑے امتحان سے کم نہیں ہے۔ اور موصوف نے اپنی خاندانی سیاست کو بچانے کیلئے پہلے اپنے ایک بیٹے سردار شمعون یار کو میدان میں اتارا۔ اور اب وہ حلقہ این اے سولہ کیلئے اپنے دوسرے بیٹے سردار شہریار کو میدان میں اتارنے کا فیصلہ کرچکے ہیں۔ سیاسی مبصرین کے مطابق سردار شہریار کسی طور پر بھی علی خان جدون کا مقابلہ کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔ سردار شہریار ، علی خان جدون کے مقابلے میں ایک ’’حلوہ‘‘ امیدوار ثابت ہونگے۔ جوکہ ایک بہت بڑی لیڈ کیساتھ الیکشن ہاریں گے۔ سیاسی مبصرین کے مطابق حلقہ این اے سولہ میں علی خان جدون کا مقابلہ کرنے کیلئے سردار مہتاب کو یا تو خود


Comments

comments