کنج میں جسم فروشی کے اڈے کھلے عام چلنے لگے۔ پولیس خاموش۔


ایبٹ آباد: جگہ جگہ جسم فروشی کا دھندا شروع ہوگیا، گنجان آباد علاقہ کنج وارڈ نمبردس اورگیارہ میں بہت سے جسم فروشی کے اڈے کھل گئے، دور جدید کی طرح ان لوگوں نے بھی جسم فروشی کے دھندے کے لئے جدید ٹیکنالوجی وٹس ایپ، فیس بک کے ذریعے گاہک تلاش کئے جاتے ہیں۔ واٹس ایپ پر لڑکی پسند کروائی جاتی ہے اور مختلف طریقوں سے لڑکیاں سپلائی کی جاتی ہیں، جگہ جگہ مکان کرائے پر لے کر وہاں پر ایسا دھندا کرنے والی عورتیں لڑکیوں کو رکھتی ہیں ۔سر شام کنج روڈ پر امیروں کی گاڑیاں اور اوباش نوجوانوں کا رش نظر آتا ہے، سر عام لڑکیوں کے معاملات طے کیے جاتے ہیں، ارد گرد کی آبادی کو ڈرایا دھمکایا جاتا ہے کیونکہ ان لوگوں کی پشت پناہی بڑے بڑے لوگ کرتے ہیں ان سے ہی سرکاری لوگوں کی نجی محفلیں سجتی ہیں، جس سے، ان پر کارروائی ہونی مشکل ہو جاتی ہے، ارد گرد کی آبادی کا جینا محال ہو چکا ہے عوامی حلقوں نے ڈی آئی جی ہزارہ، ڈی پی او ایبٹ آباد، ڈی ایس پی کینٹ، ایس ایچ او، تھانہ کینٹ، سے اپیل کردی کے ایسے لوگوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے، خصوصاً بالخصوص ایسے مکان مالکان کے خلاف کارروائی کی جائے جو خود تو دوسرے صوبوں میں رہتے ہیں مگر اپنے گھر عرصہ دراز سے ایسے جسم فروشی کا دھندا کرنے والوں کے حوالے کر رکھے ہیں۔


Comments

comments