سی پیک سپلائی بائی پاس روڈ پرمتعدد شخصیات کریڈٹ لینے میں سرگرم۔ 


ایبٹ آباد:سی پیک سپلائی بائی پاس روڈ پرمتعدد شخصیات کریڈٹ لینے میں سرگرم۔ اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ ایبٹ آباد میں پاکستان ملٹری اکیڈمی کاکول میں عسکری حکام کے علاوہ بیرون ممالک کے وفود کی آمد کا سلسلہ جاری رہتاہے۔ ایبٹ آباد کی شاہراہ ریشم پر بدترین ٹریفک جام اورسیکورٹی خدشات کے پیش نظر عسکری حکام پاکستان ملٹری اکیڈمی اورشہریوں کیلئے ہزارہ موٹروے سے شملہ پہاڑی کے قریب انٹرچینج نکالنے کا حکم جاری کیاتھا۔ اس انٹرچینج کو سپلائی کے مقام پر شاہراہ ریشم کیساتھ منسلک کیاجائے گا۔ جس سے نہ صرف قومی سلامتی کے اداروں بلکہ مقامی لوگوں کی بھی سفری مشکلات ختم ہو جائیں گی۔ پاک فوج کی بدولت انٹرچینج سے جہاں ایبٹ آباد کے شہریوں کا ایک بہت بڑا مسئلہ حل ہوجائے گا۔ وہیں دوسری طرف چند لوگ اس انٹرچینج کے نام پر سیاست چمکاکر کریڈٹ لینے کی ناکام کوششیں کررہے ہیں۔

ذرائع کے مطابق ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی مرتضیٰ جاوید عباسی، جنرل (ر) ایازسلیم رانا کے علاوہ تناول گرینڈجرگہ والے اپنے اپنے طور پر اس انٹرچینج کا کریڈٹ لینے کی ناکام کوششیں کررہے ہیں۔ جبکہ دوسری جانب ایبٹ آباد کے لوگوں نے ان شخصیات سے مطالبہ کیاہے کہ اگر وہ اتنے ہی بااثر ہیں تو مہربانی کرکے شاہراہ ریشم کو کشادہ کروادیں۔ ان کا یہ احسان ایبٹ آباد کے شہری تاقیامت یاد رکھیں گے۔


Comments

comments