شوکت تنولی کو این اے سولہ کاالیکشن لڑنے کی اجازت مل گئی۔


ایبٹ آباد:گرینڈجرگہ نے شوکت تنولی کو حلقہ این اے سولہ سے الیکشن لڑنے کی اجازت دے دی۔ شوکت تنولی کی حلقہ این اے سولہ میں دھواں دھار انٹری سے سیاسی درجہ حرارت میں اضافہ۔ اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ سابق ضلع نائب ناظم و سابق امیدوار صوبائی اسمبلی شوکت تنولی نے جمعہ کے روز اپنی رہائشگاہ پر ایک گرینڈ جرگہ طلب کیا۔ گرینڈ جرگہ میں ایبٹ آباد شہر، حویلیاں سرکل، تناول سرکل اور ایبٹ آباد کنٹونمنٹ کی سرکردہ شخصیات کے علاوہ عام لوگوں نے سینکڑوں کی تعداد میں شرکت کی۔ گرینڈجرگہ سے خطاب کرتے ہوئے شوکت تنولی نے کہاکہ میں پاکستان تحریک انصاف کا بانی کارکن ہوں۔ لیکن ضلع کا الیکشن لڑنے کیلئے ق لیگی ٹولے نے ہمیں پی ٹی آئی کا ٹکٹ نہیں دیا۔ ان لوگوں نے تین سال تک ہماری راہ میں رکاوٹیں کھڑی کیں۔ صوبائی حکومت بھی ان کی ہم نواہ تھی۔ جس کی وجہ سے میں بحیثیت ضلع نائب ناظم عوامی نمائندگی کاحق ادا نہیں کرسکا ہوں۔ جس کیلئے میں معذرت خواہ ہوں۔ اب عام انتخابات ہونے جا رہے ہیں۔ حلقہ کے بہت سے لوگوں نے مجھے مشورہ دیا کہ میں قومی اسمبلی کے حلقہ این اے سولہ سے الیکشن میں حصہ لوں۔

شوکت تنولی نے گرینڈ جرگہ کے شرکاء سے سوال کیاکہ جولوگ چاہتے ہیں کہ میں الیکشن میں حصہ لوں تو ہاتھ اٹھا کراپنی رائے کا اظہار کریں۔اس موقع پر جرگہ کے تمام شرکاء نے ہاتھ اٹھا کر شوکت تنولی سے الیکشن میں حصہ لینے کا مطالبہ کیا۔ بعد ازاں شوکت تنولی نے گرینڈ جرگہ کے شرکاء سے سوال کیا کہ جولوگ چاہتے ہیں میں الیکشن میں حصہ نہ لوں۔ وہ ہاتھ اٹھا کر اپنی رائے کا اظہار کریں۔ اس موقع پر کسی نے بھی ہاتھ نہیں اٹھائے۔ شوکت تنولی نے کہاکہ میں ایک عام آدمی ہوں۔ میرے دروازے ہر وقت لوگوں کیلئے چوبیس گھنٹے کھلے رہتے ہیں۔ میں عام لوگوں کا نمائندہ ہوں۔ میں تمام لوگوں کا مشکور ہوں۔ جنہوں نے میری دعوت پر گرینڈ جرگہ میں شرکت کی اور اپنی رائے کا اظہار کیا۔


Comments

comments