فوجداری مقدمات کافیصلہ ایک ہفتے میں۔ ہزارہ میں سپیشل کورٹس نے کام شروع کردیا۔ وکلاء سراپا احتجاج۔ 


ایبٹ آباد:فوجداری مقدمات کافیصلہ ایک ہفتے میں۔ ہزارہ میں سپیشل کورٹس نے کام شروع کردیا۔ وکلاء سراپا احتجاج۔ اس ضمن میں ذرائع نے صحافیوں کو بتایاکہ فوجداری مقدمات جن میں قتل اقدام قتل کے سنگین مقدمات کی تیزترین سماعت کیلئے ایبٹ آباد میں سپیشل کورٹ قائم کردی گئی ہے۔ جس نے کام شروع کردیاہے۔ ذرائع کے مطابق پہلی پیشی پر فاضل عدالت دونوں پارٹیوں کے وکلاء کیساتھ کیس کی سماعت شروع کرنے کا وقت مقرر کرے گی۔ اور پھر روزانہ کی بنیاد پر ان مقدمات کی تیزترین سماعت کرکے ایک ہفتہ کے اندر اس کا فیصلہ سنائے گی۔

ذرائع کے مطابق پرانے طریقہ کار میں سالوں بعد جب کیس کے گواہوں کو عدالت میں طلب کیاجاتاتھا تو گواہ بہت سے چیزیں بھول چکے ہوتے تھے۔ جس کا فائدہ ملزمان کے وکیل اٹھا کر ملزمان کو باآسانی بری کروالیتے تھے۔ ذرائع کے مطابق سپیشل کورٹس کے قیام کیخلاف وکلاء نے احتجاج اور ہڑتال کا سلسلہ شروع کررکھا ہے۔

وکلاء کا کہنا ہے کہ پہلے پولیس ریفارمز لانا ہونگی۔ پولیس عجلت میں جس ملزم کو بھی کیس میں فٹ کرے گی۔ اور تین چار دن میں گواہوں کے بیانات کی روشنی میں عدالت اس شخص کو سزا سنا دے گی۔ قلیل وقت میں فوجداری مقدمات کی تیز ترین سماعت سے انصاف مشکل ہوجائے گا۔ تاہم دوسری جانب شہریوں نے سپیشل کورٹس کے قیام پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ ان عدالتوں کے قیام سے سنگین جرائم میں نمایاں کمی واقع ہوگی۔ اور ملزمان بھی جلد کیفر کردار تک پہنچیں گے۔

gif

gif


Comments

comments