پولیس نے سعودی انجینئر پر تھانہ میں بدترین تشدد بازو ناکارہ کر دیا ۔


ہری پور (شاہ بابا سے) ہری پور میں پولیس گردی کے سابقہ تمام ریکارڈ ٹوٹ گے ۔ پولیس نے سعودی انجینئر پر تھانہ میں بدترین تشدد بازو ناکارہ کر دیا عدالتی حکم پر میڈیکل رپورٹ میں تشدد ثابت ڈی آئی جی ہزارہ نے رپورٹ طلب کرکے ملوث اہلکاروں کے خلاف کاروائی کے احکامات جاری کر دیے زرائع کے مطابق ملزم اویس عباسی ولد گلزار عباسی کے بھائی محمد طفیل عباسی نے جوڈیشنل مجسٹریٹ ہری پور کو 22Aکی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ میرے بھائی کو سٹی پولیس نے دوران حراست بدترین تشدد کیاہے جس سے بھائی کے ہاتھ پاؤں ناکارہ ہو گے ہیں جوڈیشنل مجسٹریٹ کے حکم پر ایم ایس ہسپتال نے میڈیکل بورڈ تشکیل دیا جس میں ہسپتال میڈیکل سپریڈینٹ چیرمین ایس ایم بی ڈی ایچ کیومیڈکل سپیشلسٹ ڈاکٹر انگیر خان ممبر ایس ایم اوڈاکٹر سرجن جاوید اقبال پر مشتمل بورڈ نے اپنی رپورٹ میں ہاتھ پاؤں بازو گردن سمیت جسم کے دیگر حصوں پر تشدد کے نشانات نشاندہی کرتے ہوئے رپورٹ عدالت میں جمع کرادی ہے جس میں پولیس کی جانب سے ملزم پر تشدد ثابت ہو گیا ہے جس کی آئندہ سماعت کل ہو گی ۔
ادھر ملزم کے بھائی طفیل عباسی نے ڈی آئی ہزارہ کو درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ میرا بھائی سعودی عرب میں انجینئر کی ملازمت کر تا ہے پاکستان آیا ہے بھائی کوپولیس نے سازش مدعی مقدمہ کے ساتھ ملی بھگت کرکے میرے بھائی کو مقدمہ میں نامزد کر کے 7/12/2017 کواسلام آباد سے گرفتار کیا اور 12/12/2018کو نامزد کیا میرے بھائی کو تھانہ میں تھرڈ ڈگری تشدد کا نشانہ بنایا گیا ہے جس سے بھائی کا بازو مکمل مفلوج ہو چکا ہے ڈی ایس پی صابر سٹی ایس ایچ او اے ایس آئی منیر خان ایس آئی نزاکت انسپکٹر بشیر خان کے خلاف کاروائی عمل میں لائی جائے جس پر ڈی آئی جی ہزارہ نے نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او ہری پور سید خالد ہمدانی کو احکامات جاری کرتے ہوئے معاملہ کی رپورٹ طلب کرنے کے ساتھ شہری پر تشدد کرنے والوں کے خلاف کاروائی کے احکامات بھی جاری کر دیے ہیں۔
اس ضمن میں زرائع نے بتا یا ہے کہ متاثرہ تشدد کا نشانہ بنے والے شہری کے ورثاء میڈیکل رپورٹ کی روشنی میں پولیس کے خلاف ایف آئی آر کے اندراج کے لیے اگلی (کل) سماعت پر سیشن جج کی معزز عدالت میں 22Aکی درخواست بھی دائر کریں گیں شہر کا رہائشی ایک بدنام زمانہ بدمست اے ایس آئی منیر نے محکمہ پولیس کو کاروبار بنا رکھا ہے لین دین سمیت قتل اقدام قتل چوری ڈکیتی کے ملزمان سے ڈیل کرکے پرچہ خارج کروادیتا ہے اس کیس میں بھی مبینہ رقم نہ دینے پر شہری کو ملزم بنا دیا گیا ہے اپنے افسران کو سب اچھاکی رپورٹ دیکر ہری پور پولیس کے مورال کو داؤ پر لگا رکھا ہے ۔
جبکہ پولیس حکام نے بتایا ہے کہ ملزم کے خلاف تھانہ سٹی میں مقدمہ درج ہے مقدمہ میں خاتون سمیت دو افراد کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا تھا سابق اسپیکر میجر (ر)حبیب اللہ خا ن ترین کے پرسنل سیکرٹری خالد الرحمان پر فائرنگ تاوان کیس میں مطلوب تھے سی سی ٹی وی کی مدد سے تینوں ملزمان کو گرفتا رکرکے قانون کے مطابق مقدمہ کی دفعات درج کرکے ملزمان کو چالان کے لیے عدالت میں پیش کیا گیا ہے ۔
واضح رہے کہ اس سے پہلے بھی متعدد بار پولیس گردی کے خلاف عدالتوں نے انصاف فراہمی کے لیے پولیس اہلکاروں و افسران کے خلاف احکامات جاری کیے گے جن پر آج تک عمل درآمد ممکن نہیں ہو سکا ہے


Comments

comments