احاطہ عدالت میں جھگڑا۔ تین پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیاگیا۔


ایبٹ آباد:لوہر جوڈیشل کمپلیکس ایبٹ آباد میں پولیس اہلکاروں کی جانب سے زبردستی گاڑی اندر داخل کرنے کے تنازعے پر پولیس اور عدالتی اہلکاروں میں تصادم تین پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کر کے کوارٹر گارڈ کر دیا گیا ۔ پولیس اہلکاروں نے عدالتی اہلکار، وکلاء اور ججز کو ننگی گالیاں دیں اور خوشی محمد اہلکار کو تشدد کا نشانہ بنایا اور اس دوران دیگر عدالتی اہلکار اور وکلاء موقع پر پہنچ آئے اور مذکورہ پولیس اہلکاروں کو قابو کو لیا واقعہ کی اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی یاسین جنجوعہ موقع پر پہنچ گئے اور تین اہلکاروں، وقار درانی، افضال اور لوہر کورٹ کے گارڈ کمانڈر عاطف کو گرفتار کر کے کوارٹر گارڈ کر دیا اور عدالتی اہلکار خوشی محمد کی درخواست پر ان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ۔

تنازعہ اس وقت شروع ہوا جب وقار درانی نامی پولیس اہلکار نے لوہر جوڈیشل کمپلیکس کے گیٹ سے زبردستی گاڑی اندر داخل کرنے کی کوشش کی جس ڈیوٹی پر مامورخوشی محمد اہلکار نے اسے گاڑی اندر داخل کرنے سے منع کیا جس پر مذکورہ اہلکار طیش میں آ گیا اور اس نے اپنے ساتھیوں سمیت اسے دبوچ کیا اور لاتوں مکوں سے اس پر تشدد کیا اور اس نے اس دوران وکلاء اور ججز کو آرے ہاتھوں لیتے ہوئے ننگی گالیاں دیں جس پر کورٹ میں وکلاء نے عارضی طور پر ہڑتال شروع کر دی اور ججز نے عدالتی کام روک دیا اور ڈی پی او ایبٹ آباد کو واقعہ کی اطلاع دی اسی اثناء میں سرکل کینٹ کے ڈی ایس پی یاسین جنجوعہ اطلاع ملتے ہی موقع پر پہنچ گئے اور مذکورہ تینوں پولیس اہلکاروں کو خوشی محمد کی درخواست پر حراست میں لیکر پولیس لائن میں کوارٹر گارڈ کر دیا اور واقعہ کی انکوائری کیلئے ٹیم تشکیل دے دی اور ججز اور وکلاء کو یقین دہانی کروائی کہ مذکورہ اہلکاروں کے خلاف انکوائری کے بعد سخت ترین قانونی کاروائی کی جائے گی


Comments

comments