یواین وویمن کے تعاون سے ایبٹ آباد میں خواتین کیلئے پنک بس سروس کا اجراء۔


ایبٹ آباد:یواین وویمن کے تعاون سے ملک کے دیگرشہریوں کے بعد ایبٹ آباد میں خواتین اوربچوں کیلئے بس سروس کا آغاز بارہ جون سے کیا جارہاہے۔ اس حوالے سے یواین وویمن کے نمائندے فہد جبار اور سریرالدین نے وائس آف ہزارہ کو بتایاکہ پوری دنیا میں خواتین کو تحفظ فراہم کرنے کے حوالے سے پنک بس سروس کا اجراء کیاگیاتھا۔ دنیا کے دیگر ممالک میں یہ بس سروس کئی سالوں سے کام کررہی ہے۔ پنجاب کے کئی بڑے شہروں میں پنک بس سروس سال 2012ء سے کام کررہی ہے۔ سال 2016ء میں خیبرپختونخواہ حکومت نے جاپان کیساتھ بسوں کی فراہمی کا معاہدہ کیاتھا۔ مئی 2018ء میں ایبٹ آباد اور مردان کیلئے جاپان سے چودہ بسیں درآمد کی گئی تھیں۔ اور گیارہ مئی کو وزیراعلیٰ خیبرپختونخواہ نے مردان کیلئے پنک بس سروس کا افتتاح کیاتھا۔ چودہ بسوں میں سے سات بسیں مردان جبکہ سات بسیں ایبٹ آباد کو فراہم کی گئی ہیں۔ ضلع ایبٹ آباد کا چناؤ اس لئے کیاگیاتھاکہ یہاں پر خواتین کی ایک بہت بڑی تعداد روزانہ تعلیمی اداروں اور دفاتر کا رخ کرتی ہے۔ اور ایبٹ آباد میں سوزوکی گاڑیوں میں خواتین انتہائی مشکلات کا شکار تھیں۔ ان سوزوکی گاڑیوں میں خواتین کو مردوں کیساتھ سفر کرنا پڑتاتھا۔ جس کی وجہ سے ایبٹ آباد میں پنک بس سروس کا اجراء کیاگیاہے۔

پنک بس میں خواتین اور بارہ سال سے کم عمر بچے سفر کرسکیں گے۔ یہ بسیں مٹسوبسی جاپان نے تیار کی ہیں۔ جن میں جدید ترین فیوچر ہیں۔ ان بسوں میں خود کار دروازے، ایئرکنڈیشن اور آرام دہ سیٹیں نصب کی گئی ہیں۔ ہر بس میں چالیس خواتین کے بیٹھنے کی گنجائش ہے۔ جبکہ خواتین کھڑے ہو کر بھی اس میں سفر کرسکیں گی۔

اس بس میں سیکورٹی اور حفاظت کے لئے دیگر چیزیں بھی رکھی گئی ہیں۔ اس کے علاوہ پنک بس میں کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے فرسٹ ایڈ باکس اور ڈرائیور سیٹ کے پاس کنٹرول بھی رکھاگیاہے۔ ایبٹ آباد میں شاہراہ ریشم پر مختلف اہم مقامات پر پنک بس سروس کے سٹاپ بنادیئے گئے ہیں۔مردان کے بعد ایبٹ آباد میں پنک بس سروس کا اجراء بارہ جون کی شام کیا جائے گا۔


Comments

comments