وزیراعظم کے معائنے کے موقع پر تربیلاڈیم کی ٹربائن سے پانی ٹپکناشروع ہوگیا۔


ایبٹ آباد:چوتھے توسیع منصوبہ کے افتتاح سے قبل ہی ٹربائن میں دراڑیں ناقص تعمیرات کی وجہ سے پانی چھتوں سے ٹپکتا رہا انتظامیہ نے وزیر اعظم کو متاثرہ جگہ کا دورہ نہیں کرایا جلد نقص دور کر لیا جائے گا ڈیم انتظامیہ کا موقف اس ضمن میں زرائع نے بتایا ہے کہ تربیلا ڈیم انتظامیہ نے وزیر اعظم کی آمد افتتاح سے قبل آزمائشی بنیادوں پر پانی کو ٹی فور کی ٹربائن سرنگ سے پانی کو گزارا گیا مگر پانی لیکج کے ساتھ سرنگ سے نکل کر ڈیم کے پاور ہاؤس میں داخل ہوگیا جس سے اکیاون ملین ڈالر کے منصوبے کی قلی کھل گئی ہے غیر معیاری ناقص میٹریل کے استعمال کی وجہ سے ڈیم انتظامیہ نے کوئی رپورٹ اعلی حکام کو پیش نہیں کی ۔

معتبر زرائع نے بتایا ہے کہ 470میگاواٹ کو پہلا یونٹ دو ماہ قبل مکمل ہونا تھا منصوبہ کی مدت کو 48ماہ سے کم کرکے 42ماہ پر لایا گیا وزیر اعظم کے تیز تر تکمیل پروگرام کے تحت خصوصی ہدیات پر منصوبہ کو تین سال میں مکمل کر لیا گیاتکمیل کی مدت کم کرنے کے بعد 470میگاواٹ پیدواری صلاحیت کا پہلا منصوبہ مارچ دوسر اپریل تیسرا مئی 2017میں مکمل ہونا تھاعالمی بینک کے معاہدے میں طے پایا گیا تھا کہ اضافی رقم اقساط کی صورت میں اد اکی جائے گی تعمیراتی کام عالمی معیار کنسٹریکشن تسلی بخش ہوئی تو اگلی قسط جاری کر دی جائے گی عدم اطمیان کی صورت میں اقساط روک لی جائیں گیں مگر بد قسمتی سے پہلا یونٹ ہی اپنے مقررہ وقت مدت میں مکمل نہ ہو سکا افتتاح کے باوجود بھی اس پر کام جاری ہے اس ضمن میں زرائع نے تصدیق کی ہے کہ تربیلا ڈیم توسیع منصوبے پرجرمنی اور چائینہ کی دو کمپنیاں کام کر رہی ہیں ۔

رابطہ کرنے پر تربیلا ڈیم واپڈا کے ترجمان نے بتایا تھا کہ خامیوں کی نشاندہی کر لی گئی تھی منصوبے سے بجلی کا پیدواری عمل متاثر نہیں ہوگاخامیوں کو دورکرنا سول کنٹریکٹر کی زمہ داری ہے الیکٹریکل مکینیکل آلات سے مختلف تجربات کیے جا چکے ہیں شیڈول کے مطابق وزیر اعظم نے افتتاح کر دیا ہے جبکہ باوثوق زرائع نے انکشا ف کیا ہے کہ ٹی فور ٹربائن سال میں 72دن کام کریں گیں سیلاب کے دنوں میں زیادہ کارآمد ہوں گیں وزیر اعظم کی آمد پرڈیم انتظامیہ نے دیگر چورہ یونٹ مکمل بندکرکے افتتاحی یونٹ کو چالو کیا ہے تمام یونٹ کو بیک وقت چلانے کی صلاحیت تاحال نہیں ہے گزشتہ بارشوں کے دنوں میں بھی نو تعمیر ٹربائن کی چھتوں سے پانی ٹپکتا رہا ہے مگر ڈیم انتظامیہ نے کوئی توجہ نہیں دی ادھر عالمی بینک کے ترجمان کے مطابق عالمی ٹیم مسلسل ٹی فور منصوبے کی تعمیر کے دوران دورہ کرتی رہی ہے منصوبہ کا پہلا یونٹ پلان کے مطابق طے شدہ پروٹوکول کے مطابق بنایا جا رہا ہے زرائع نے بتایا ہے کہ تین سرنگوں سے 3478میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت موجو دہے تربیلا ڈیم سے بجلی کی سالانہ اوسطاسولہ ارب یونٹ فعال کیے جاتے ہیں چوتھے توسیع منصوبہ مکمل ہونے سے سالانہ تین ارب 84کروڑ یونٹ پیدا کیے جا سکے گیں جس سے ملکی انرجی بحران پر قابو پاکر بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں بھی کمی واقع ہو گی منصوبہ مکمل ہونے سے سالانہ تیس ارب ڈالر کی بچت بھی ہوگی۔

یاد رہے کہ تربیلا ڈیم کی پانچ نہریں اور پانچ سرنگیں 1978کے منصوبے کے تحت بنائی گئیں تھیں تین سرنگوں سے بجلی کی پیداوار جا رہی ہے واضح رہے کہ تربیلا ڈیم ملازمین مطالبات نہ مانے پر ہڑتال پر ہیں۔


Comments

comments