پولیس کانسٹیبل مظہرقتل کیس ۔ملزمان نے اقرارجرم کرلیا۔ آلہ قتل بھی برآمد۔ 


ایبٹ آباد:پولیس کانسٹیبل مظہرقتل کیس ۔ملزمان نے اقرارجرم کرلیا۔ آلہ قتل بھی برآمد۔ پولیس اورمقامی ذرائع کے مطابق کاغان کالونی میں قتل کئے جانیوالے پولیس کانسٹیبل مظہر کے قتل میں نامزد چارملزمان کاغان کالونی کے رہائشی لقمان عرف لکی ولد سجاد،، سپلائی ترکنہ کے رہائشی احتشام شاہ ولد سیّدمجتبیٰ شاہ، جاوید شہید روڈ کے رہائشی زین ولدشاہدکو پولیس نے ضمانت قبل از گرفتاری منسوخ ہونے پر گرفتار کیاتھا اور تفتیش کیلئے جوڈیشل مجسٹریٹ سے دوروزہ جسمانی ریمانڈ لیاتھا۔ تینوں ملزمان نے پولیس کی تفتیش پر عدم اعتماد کرتے ہوئے ڈی آئی جی ہزارہ کو کیس کی تفتیش ہری پور پولیس کو منتقل کروانے کی درخواست دی۔ جس پر ہری پورپولیس کے انسپکٹررحم نوازکی سربراہی میں تین رکنی تفتیشی ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ جس میں تھانہ سرائے صالح کے ایس ایچ او انورخان اور اے ایس آئی راشد شامل ہیں۔

ABBOTTABAD: May15 – Policeman Showing Luqman Alias Lucky, Ehtisham Shah & Zain Alleged accused in Police Constable Mazhar Murder Case, during Press Conference in PS Mirpur. 

پولیس ذرائع کے مطابق دوروزہ تفتیش کے دوران ملزمان نے پولیس کانسٹیبل مظہر کو قتل کرنے کا اعتراف کیا اور ملزمان کی نشاندہی پر آلہ قتل پستول بھی برآمد کرلیاگیاہے۔ لقمان عرف لکی سے بھی برآمدگی کی گئی ہے۔منگل کے روز تینوں ملزمان کو علاقہ مجسٹریٹ کی عدالت میں برآمد ہونے والے اسلحہ سمیت پیش کیاگیا۔ تینوں ملزمان نے عدالت میں اقرار جرم کرلیا۔جس کے بعد تینوں ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پرایبٹ آباد جیل منتقل کردیاہے۔

لقمان عرف لکی نے موچھوں کو تاؤ دے کر خصوصی پوزبنوایا۔

ایبٹ آباد: پولیس کانسٹیبل مظہرقتل کیس کے مرکزی ملزم لقمان عرف لکی نے موچھوں کو تاؤ دے کر خصوصی پوزبنوایا۔ منگل کے روز جب صحافیوں کی ٹیم کو تھانہ میرپور میں مظہرقتل کیس کی تفتیش کے سلسلے میں پولیس نے پریس کانفرنس کے لئے بلایا ۔ جب ملزمان کی تصاویر بنانے کا وقت آیا تو کیس کے مرکزی ملزم لقمان عرف لکی نے فوٹوگرافرز سے کہاکہ وہ پہلے موچھوں کو تاؤ دے لے۔ اس کے بعد اس کی اچھی سی دہشت ناک فوٹو بنا کر اخبار میں شائع کی جائے۔ اور پھر یہ تصویر وٹس ایپ پر بھی اسے بھیجی جائے۔ جس کے بعد لقمان عرف لکی نے اپنی موچھوں کو تاؤ دیا اور پھر دیگرملزمان کے ہمراہ تصویر بنوائی۔


Comments

comments