تربیلہ جھیل میں مسافرکشتی ڈوبنے سے ستائیس افرادلاپتہ۔ تین بچوں سمیت چھ افرادکی لاشیں نکال لی گئیں۔

ہری پور(یاورحیات )ہری پور کے قریب تربیلا جھیل میں کشتی الٹنے سے تین بچے جاں بحق جبکہ دوخواتین سمیت آٹھ افراد کو زندہ بچالیاگیا ڈوبنے والے دیگر افراد کی تلاش کے لئے پاک آرمی اورررریسکیوادارں کی جانب سے امدادی کاروائیاں جاری ہے ہیں رات اندھیرے کے باعث سرچ آپریشن روک دیا گیا تھا جو آج صبح سے پھر شروع کر دیا جائے گا بدقسمت مسافرکشتی کالا ڈھاکہ ضلع توغر سے آرہی تھی کہ برگ کے مقام پر الٹ گئی واقعے کی اطلاع ملتے ہی امدادی ادارے فوری طور پر پہنچے اور مقامی افراد کی مدد سے امدادی کارروائیاں کیں۔ڈپٹی کمشنر ہری پورعارف اللہ کے مطابق ڈوبنے والی کشتی میں تقریباً 35سے 40افراد سوار تھے ،

جن میں زیادہ ترافراد کاتعلق ضلع طورغر سے تھاحادثہ میں اب تک تین بچوں کی لاشوں کونکال لیاگیاہے۔ڈپٹی کمشنر ہری پور کاکہناہے کہ ضلعی انتظامیہ نے ہری پور میں تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کردی ہے۔ پڈہانہ کے مقام پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ،ہری پور کی نگرانی میں میڈیکل سنٹر قائم کردیاگیاہے، اے ڈی سی ہر ی پورعبید اللہ کاکہناہے کہ کشتی میں کتنے افراد تھے ابھی کچھ نہیں کہاجاسکتاہے تاہم ریسیکیوآپریشن جاری ہے۔نوشہرہ ،مردان اورپشاور سے بھی ریسکیو ٹیموں کو بلالیاگیا ہے جبکہ پاک آرمی کے غوطہ خور اور دوہیلی کاپٹر بھی امدادی کارروائیوں میں حصہ لے رہے ہیں جبکہ جھیل کے کنارے امدادی اداروں نے کیمپ لگالئے ہیں

صوبائی وزیرمواصلات اکبرایوب سمیت تمام سرکاری ضلعی محکموں کے اعلی حکام بھی موقع پر موجود تھے جو امدادی کارروائیوں کی نگرانی کررہے ہیں جبکہ کشتی میں ڈوبنے والے افراد کے لواحقین کی بڑی تعداد بھی جھیل کنارے پہنچ چکی ہے اس کے ساتھ ساتھ پولیس ،ایمبولینس کی گاڑیاں بھی موجود ہیں مقامی کشتی ملاح کاکہناہے کہ یہاں کشتی میں معمول کے مطابق ساٹھ سے سترہ مسافر ہوتے ہیں اور کشتی میں مسافروں کے ساتھ ساتھ مویشی بھی سوار کئے جاتے ہیں ،گنجائش سے زیادہ مسافراور مویشی کشتی میں سوارہونے کے باعث حادثہ رونما ہوا۔دوسری جانبلاپتہ افراد کی تلاش کے لئے ریسکیواورمقامی لوگوں کی مدد سے آپریشن رات گے تک جاری رہا

جس کو رات دس بجے روک دیا گیا آج صبح پھر سے سرچ آپریشن شروع کیا جائے گا تاہم جھیل میں پانی کے تیز بہاؤ کی وجہ سے ریسیکیو آپریشن میں دوشواری کا سامنا رہا ہے آزاد زرائع کے مطابق ہری پور میں تربیلہ جھیل میں مسافروں سے بھری کشتی الٹ گئی جس کے باعث ستر سے زائد مسافرڈوب گئے۔پندرہ افراد کو زندہ بچالیاگیا جبکہ دیگر کی تلاش کاعمل جاری ہے ،دوخواتین سمیت تین افراد کی لاشوں کو نکال لیاگیا۔مسافر کشتی یونین کونسل نارہ امازئی کے گاؤں برگ سے گاؤں جا رہی تھی کہ حادثے کا شکار ہو گئی ۔حادثے کی اطلاع ملتے ہی ریسکیوٹیمیں جائے حادثہ کی طرف روانہ کردی گئیں،دشوارگزارراستوں کی وجہ سے ریسکیوٹیموں کو مشکلات کا سامنا ہے۔جبکہ سیکرٹری یونین کونسل برگ یاسر ایاز ضلع ناظم تور غر جمروز خان کے مطابق کشتی میں ساٹھ سے زیادہ زائد افراد مسافر سوار تھے جن کے ساتھ تیس بکریاں پانچ بیل اور تین گائے مویشی بھی سوار تھے

۔مقامی افراد نے اب تک دس افراد کو اپنے مددآپ کے تحت ریسکیوکارروائیاں کرکے نکالاہے۔کشتی ڈوبنے کے بعد ریسکیو حکام نے پشاور سے مزید ریسکیو اہلکار اور خوطہ خور طلب کر لیے۔ جبکہ ڈی سی کا فوری اقدامات اٹھا کر امدادی کاروائیاں تیز کرنے کی ہدایات جاری کردی گئی ہیں ۔ذرائع کاکہناہے کہ کشتی الٹنے سے جاں بحق ہونے والی تین بچو کی لاشوں کا نکال لیا گیا ہے ۔دوسری جانب میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈی ایچ کیو ہری پور کے مطابق کشتی حادثہ کے بعد،ڈی ایچ کیو ٹیچنگ ہسپتال ہری پور میں ایمرجنسی نافذکردی گئی ہسپتا ل کے تمام سٹاف ڈاکٹر ز،پیرامیڈیکل سٹاف کو فوری طور پر ہسپتال پہنچنے کی ہدایت کردی گئی ہے۔

سرکاری زرائع نے تصدیق کی ہے کہ کشتی الٹنے کے افسوسناک واقعہ میں تین بچوں کی میت نکال لی گئی ہے ڈپٹی کمشنر ہری پور عارف اللہ نے بتایا ہےکہدو بچے اور سات مردوں کو زندہ بچا لیا گیا ہے ریسکیوو سرچ آپریشن جاری رہے گا کشتی ڈوبنے کے دوران زندہ جان بچانے والا کشتی مسافر ہری پور پہنچ گے ہیں زندہ بچ جانے والوں میں عزیز الدین نامی مسافر کی ایکسپریس نیوزسےخصوصی گفتگو کےدوران بتایاہے کہ دس افراد نے تیراکی کرکے اپنی جان بچائی ہے جن میں میں بھی شامل ہوں کشتی ہری پور مسافروں کو لے کر آرہی تھی
بچوں کی لاشیں ہری پور پہنچ گئیں بچوں کی عمریں پانچ سے سات سال کے درمیان ہیں
ایک پچاس سالہ خاتون اس کا شوہر بھی زندہ بچ جانے والوں میں شامل ہیں ہرری پور۔کشتی حادثے میں دس گھںنٹے جاری رہنے والاریسکیو اپریشن آج صبح پھر شروع ہو گا

Facebook Comments