ہمارا فیس بک پیج

ایبٹ آباد پولیس کی مولانا عبدالحمید قریشی کیخلاف ایف آئی آر: علمائے کرام میدان میں آگئے۔ جیل بھروتحریک شروع کرنے کا اعلان۔

ایبٹ آباد(وائس آف ہزارہ)ایبٹ آباد مسجد قباء ڈی ایچ کیو ہسپتال مولانا عبدالحمید قریشی پر کی جانے والی ایف آئی آرواپس لی جائے اگر پرچہ واپس نہ لیا گیا تو علماء جیل بھرو تحریک شروع کی جائے گی جس کی تمام تر ذمہ داری ایبٹ آباد پولیس اور ضلعی انتظامیہ پر عائد ہو گی اتوار کے روز مدرسہ اسحاقیہ مدنیہ میں مسجد قباء ڈی ایچ کیو ہسپتال مولانا عبدالحمید قریشی کے خلاف درج کی جانے والی ایف آئی آر کو ختم کرنے کے حوا لے سے اجلاس تمام دینی جماعتوں جمعیت علمائے اسلام,اہلسنت ولجماعت,عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت,اشاعت توحید,انجمن اتحاد شہریان کے سربراہان نے شرکت کی جمعیت علمائے اسلام کے ضلعی صدر مولانا انیس الرحمن کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا مولانا الطاف الرحمن,مولانا مفتی عبدالواجد,مولانہ صدیق شریفی,مولانا غلام مجتبی,مولانا شفیع الرحمن,سابق امیدوار قومی اسمبلی حاجی ایاز خان,حکیم شیخ خالد عظمت, مفتی جعفر طیار,اسد قریشی کے علاوہ سول سوسائٹی کے ذمہ داران نے کثیر تعداد میں شرکت کی آج علمائے اکرام کا وفد مولانا انیس الرحمن کی قیادت میں ڈپٹی کمشنر,ڈی پی او سے ملاقات کریں گے مفتی عبدالواجد,مولانا انیس الرحمن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا 2014میں قائد جمعیت علمائے اسلام نے عمران خان کو یہودیوں کا ایجنٹ کہا 15دن قبل خطیب مسجد قباء مولانا عبدالحمید قریشی نے کہا آج ایبٹ آباد کے تمام علمائے کرام کی جماعتوں کے سربراہان وزیر اعظم عمران خان کو یہودیوں کا ایجنٹ کہتے ہیں مولانا عبدالحمید قریشی نے اگر خلفائے راشدین کے خلاف بات کی ہوتی تو ایف آئی آر درج ہوتی کوئی دکھ نہیں ہوتا انہوں نے ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی اور ملک میں نہتے شہریوں پر ظلم کے خلاف بات کی ہے ڈسٹرکٹ ایبٹ آباد کے علمائے اکرام کے ایک ہزار اختلافات ہوں اس موقع پر ایک چھڑی کے نیچے مر مٹنے کو تیار ہیں مولانا عبدالحمید قریشی پر درج کی گئی ایف آئی آر واپس لی جائے ورنہ ایبٹ آباد سمیت ملک بھر میں علماء جیل بھرو تحریک شروع کی جائے گی جس کی تمام تر ذمہ داری ایبٹ آباد ضلعی انتظامیہ پر عائد ہو گی

علمائے کرام کا ڈی پی او سے ایف آئی آر واپس لینے کا مطالبہ۔
ایبٹ آباد(وائس آف ہزارہ)خطیب جامع مسجد قبا ڈسٹرکٹ ہسپتال ایبٹ آباد پر ملک میں مہنگائی اور لاقانونیت کے خلاف بات کرنے پے مقدمہ کے اندراج پر مذہبی جماعتوں کے اکابرین کی ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سے ملاقات، فی الفور ایف آئی آر واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے،اس حوالہ سے ضلعی امیر جے یو آئی مولانا انیس الرحمن کی سربراہی میں ڈسٹرکٹ خطیب ضلعی امیر عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت مفتی عبدالواجد،مولانا الطاف الرحمن،مولانا صدیق شریفی،مولانا غلام مجتبی،مفتی جعفر طیار مقبول اعوان،مولانا خالد،مولانا شیر محمد،مولانا عبدالحمید قریشی،انجمن اتحاد شہریاں کے صدر ملک سجاد،اہلسنت والجماعت کے ضلعی رہنما حاجی ایاز خان سابق امیدوار قومی اسمبلی طارق سلطان کے علاوہ دیگر نے ڈی پی او سے ملاقات کی اور مولانا عبد المجید قریشی پر ایف آئی آر کے حوالہ سے یک نکاتی ایجنڈہ پر بات چیت کی اور ایف آئی آر کو واپس لینے پر زور دیا۔اس موقع پر ایس ایس پی ہیڈکواٹر عارف جاوید ڈی ایس پی کینٹ راجہ محبوب بھی موجود تھے۔علماء کرام کا کہنا تھا شہر کے امن میں علماء کرام کا ہمیشہ کلیدی کردار رہا ہے،پولیس کی جانب سے عجلت میں کی جانے والی ایف آئی آر قابل مذمت ہے،ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر ظہور بابر آفریدی کا کہنا تھا ممبر ومحراب کی آواز انتہائی مؤثر ہوتی ہے جس کو عوام بڑی توجہ اور عقیدت سے سنتے اور مانتے ہیں علمائے کرام کے ساتھ امن امان کے قیام کے لئے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔


شیئر کریں

Share on facebook
Facebook
Share on twitter
Twitter
Share on whatsapp
WhatsApp
Share on print
Print

اہم خبریں

error: Content is protected !!