ایبٹ آباد میں دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کیخلاف کارروائی شروع کردی گئی۔

ایبٹ آباد(وائس آف ہزارہ)موٹر وہیکل ایگزامینر MVE انور خان اور انکی ٹیم نے سموگ اور ماحولیاتی آلودگی کے خلاف آگاہی مہم شروع کر دی ہے۔ایس ایس پی ٹریفک قمر حیات خان نے وارڈنز کو ہدایت کی ہے کہ دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کو وارننگ دیتے ہوئے ایجوکیٹ کیا جائے۔یکم ستمبر سے دھواں چھوڑنے والی گاڑیوں کیخلاف کارروائی کی جائیگی۔قانونی کارروائی کے لئے ایبٹ آباد ٹریفک پولیس اور محکمہ ماحولیات کی مشترکہ ٹیمیں تشکیل دی جائیں گی۔شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر خصوصی ناکے لگاکر بھی قانونی کارروائی کو یقینی بنایا جائیگا۔

گاڑیوں کی فٹنس کے متعلق MVE انور خان کا کہنا تھا کہ گاڑی کو سڑک پر لانے کے لیے ایک فٹنس سرٹیفیکیٹ درکار ہوتا ہے گاڑی کا مکمل معائنہ کرنے کے بعد جاری کیا جاتا ہے تاکہ خراب گاڑی سڑک پر چلنے سے کسی دوسرے کو نقصان نہ پہنچے۔ فٹنس سرٹیفیکیٹ نہ رکھنے والی گاڑیوں کے مالکان کے خلاف قانونی کارروائی کی جاے گی موٹر وہیکل ایگزامینر انور خان نے کہا کہ موٹر وہیکل آرڈیننس 1965 کے سیکشن 39 کے تحت پاکستان میں گاڑیاں چلانے کے لیے ڈرائیونگ لائسنس اور متعلقہ دستاویزات کے ساتھ گاڑیوں کا فٹنس سرٹیفیکیٹ بھی ضروری ہے۔

’گاڑیوں کو سرٹیفیکیٹ کے اجرا سے قبل تین چیزیں دیکھی جاتی ہیں: انجن، ٹائر اور باڈی۔ ہم چیک کرتے ہیں کہ انجن دھواں (زیادہ) نہ دیتا ہو، ٹائر 1.66 ملی میٹر کا ہو اور بریک ٹھیک ہوں۔‘ان کا کہنا تھا کہ فٹنس سرٹیفیکیٹ نہ رکھنے والی گاڑیوں کے خلاف قانونی کارروائی کی جاے گی۔

اس مقصد کے لیے ہم نے ایک شیڈول بنایا ہے جس کے تحت ہم روزانہ کسی ایک علاقے میں گاڑیوں کو چیک کرتے ہیں۔موٹر وہیکل ایگزامینر کے دائرہ کار میں بڑی گاڑیوں، بسوں، ٹرکوں، کوسٹرز، اور ٹیکسیوں کے علاوہ لوگوں کی نجی کاروں اور دیگر چھوٹی گاڑیوں کی فٹنس چیکنگ بھی شامل ہے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران

نیوز ہزارہ

error: Content is protected !!