یکم اکتوبر کو پٹرول سستا کرنے کے اعلان کیساتھ عوام کیلئے نیا ٹیکا بھی تیار۔

گیس کا گردشی قرض 2900 ارب ہو گیا، گھریلو صارفین کیلئے سبسڈی ختم
اسلام آباد(وائس آف ہزارہ)آئی ایم ایف کی ہدایت پر نگراں حکومت نے گیس قیمتوں میں اضافے کی تیاریاں مکمل کر لیں، ذرائع وزارت پٹرولیم کے مطابق یکم اکتوبر سے درآمدی اور مقامی گیس کی ایک ہی قیمت مقرر کیے جانے کا امکان ہے، گھر یلو، کھاد اور کیپٹو پاور پلانٹس کے گیس ٹیرف میں سبسڈی ختم کیے جانے کا امکان ہے ملک کی مقامی گیس پیداوار 3.4 ارب مکعب فٹ یومیہ ہے، ملک میں ایک ارب مکعب فٹ گیس یومیہ درآمد کی جارہی ہے، گیس کا گردشی قرض 2 ہزار 900 ارب روپے کی ریکارڈ سطح پر پہنچ گیا اوگرا نے یکم جولائی سے سوئی سدرن کیلئے 1 ہزار 350 روپے جبکہ سوئی ناردرن کیلئے 1 ہزار 239 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو ٹیرف مقرر کیا تھا، گھر یلو صارفین کو اوسط 450 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو گیس فراہم کی جاتی ہے، سلنڈر استعمال کرنے والے صارفین کیلئے یہ لاگت 5 ہزار 298 روپے بنتی ہے، اتنی ہی مقدار کی ایل این جی کی لاگت 4 ہزار 473 روپے بنتی ہے۔

یکم اکتوبر سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کی خوشخبری۔
ڈالر ریٹ کم ہونے سے روپیہ مستحکم ہوا، جس کی وجہ سے درآمدی بل میں کمی کا اثر عوام کو منتقل کیا جائے گا۔
عالمی مارکیٹ میں پٹرولیم قیمتوں میں اضافے کے باوجود حکومت نے پٹرول اور ڈیزل کے نرخ کم کرنیکا فیصلہ کر لیا۔
کراچی(وائس آف ہزارہ) حکومت نے پٹرول کی قیمت کم کرنے کا بڑا فیصلہ کر لیا ہے، نگراں وزیر صنعت گو ہر اعجاز نے خوشخبری سناتے ہوئے کہا ہے کہ یکم اکتوبر سے پٹرول کی قیمت میں کمی آجائے گی۔ کراچی میں کاروباری برادری سے ملاقات کے بعد گورنرسندھ کامران ٹیسوری کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے گوہر اعجاز نے بتایا کہ ڈالر کی قیمت میں اضافے کی وجہ سے پیٹرول سمیت تمام اشیا کی مہنگائی ہوئی ہے۔ گو ہر اعجاز نے کہا کہ انٹر بینک اور اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر کم ہوئی ہے، اقدامات کی وجہ سے کرنسی اپنی جگہ پر آگئی ہے، غیر قانونی طور پر باہر ڈالر بھیجنے والوں کو روکنے سے بہتری آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری ذمہ داری ہے صنعت اور تجارت کا خیال رکھیں، ڈالر کی قدر کم ہونے سے عوام کو ریلیف ملے گا، ڈالر کی قیمت بڑھنے کی وجہ سے مہنگائی بڑھی، یہ نہیں ہوسکتا کہ 17 ڈالر کی گیس خرید کر 4 ڈالر میں دیں۔ نگراں وزیر صنعت نے کہا کہ اسپیشل انویسٹمنٹ فیسیلیٹیشن کونسل (ایس آئی ایف سی) میں سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات (یو اے ای) سے بڑی سرمایہ کاری آرہی ہے۔ عالمی مارکیٹ میں اضافے کے باوجود پٹرولیم مصنوعات کی درآمد کابل کم ہوا ہے جس کا فائدہ عوام کو منتقل کیا جائیگا۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران

نیوز ہزارہ

error: Content is protected !!