ایوب ٹیچنگ ہسپتال بکنگ پوائنٹ بن کر رہ گیا۔ مریض لٹ گئے۔ مشینوں کے بعد آپریشن بھی بندکردیئے گئے۔

ایبٹ آباد(وائس آف ہزارہ) ایوب ٹیچنگ ہسپتال بکنگ پوائنٹ بن کر رہ گیا۔ مریض لٹ گئے۔ مشینوں کے بعد آپریشن بھی بندکردیئے گئے۔ لٹیروں نے عوام سے صحت کی بنیادی سہولیات بھی چھین لیں۔ اس ضمن میں ایوب ٹیچنگ ہسپتال میں علاج معالجے کیلئے آنیوالے مریضوں نے صحافیوں کوبتایاکہ ایوب ٹیچنگ ہسپتال کو سینئر ڈاکٹروں نے بکنگ پوائنٹ بنارکھاہے۔ یہاں آنیوالے مریضوں کی اکثریت کو ہسپتال کے باہر قائم نجی ہسپتالوں میں ریفر کردیاجاتاہے۔ جس کی وجہ سے غریب لوگ پروفیسروں اور ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹ کی نجی ہسپتالوں میں لاکھوں روپے قرض لیکر علاج کرواتے ہیں۔ ایوب ٹیچنگ ہسپتال کی سی ٹی سکین، ایم آرآئی، ایکسرے، لیبارٹری کی مشینوں کے بعد اب ہسپتال میں مریضوں کے آپریشن بھی بند کردیئے گئے ہیں۔ پہلے مریضوں کو چھ ماہ سے ایک سال کا وقت آپریشن کیلئے دیاجاتاتھا۔ چھ ماہ کے بعدجب غریب مریض کا نمبر آپریشن کیلئے آتاتھا، تو اس روزڈاکٹرصاحبان آپریشن ملتوی کردیتے تھے۔ تاہم اب یہ سلسلہ بھی بندکردیاگیاہے۔ اور مریضوں کو سینئرڈاکٹراپنی نجی ہسپتالوں میں آپریشن پر مجبور کردیتے ہیں۔ مریضوں کے مطابق ایوب ٹیچنگ ہسپتال کی سرکاری مشینری تباہ ہونے لگی ہے۔ جس کی وجہ سے مریض ڈاکٹروں کے ہاتھوں بری طرح لٹ رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران

نیوز ہزارہ

error: Content is protected !!