ہمارا فیس بک پیج

کنٹونمنٹ بورڈ شعبہ انسداد تجاوزات میں تعینات کرپٹ اور راشی عملے نے غریب اور دیہاڑی دار مزدوروں کا جینا دوبھر کر دیا۔

ایبٹ آباد(وائس آف ہزارہ)ایبٹ آباد کینٹ کے دیہاڑی دارمزدوروں نے کہا ہے کہ کنٹونمنٹ بورڈ شعبہ انسداد تجاوزات میں تعینات کرپٹ اور راشی عملے نے غریب اور دیہاڑی دار مزدوروں کا جینا دوبھر کر دیا ہے رات کی تاریکی میں سامان اٹھا کر لیجانا اور پھر ہزاروں روپے جرمانہ کرنا معمول بن گیا ہے۔جس سے شہری سخت پریشانی میں مبتلا ہو گئے ہیں جبکہ افسران بالانے سب کچھ جاننے بوجنے کے باجود پر اسرار خاموشی اختیار کر لی ہے۔ ایبٹ آبادکنٹونمنٹ کے کرپٹ اور راشی عملے نے منڈیاں میں اندھیر نگری چوپٹ راج قائم کر رکھا ہے طارق نامی اہلکارمبینہ طور پر رات کی تاریکی میں لوگوں کی ریڑھیاں اٹھاتا اور پھر انہیں مبینہ طور پر بھتہ دینے پر مجبور کر تا ہے بھتہ نہ دینے والوں کو تنگ کرنااور بھاری بھرکم جرمانے کرنا بھی کینٹ بورڈ کا وطیرہ بن گیا ہے۔جس کی وجہ سے دیہاڑی دار مزدور سخت پریشانی میں مبتلا ہیں۔

غریب مزدوروں نے کہا کہ کینٹ کے مختلف علاقوں میں کئی سالوں سے ریڑھی بان اور اسٹالز ہولڈر محنت مزدور کر کے اپنا اور اپنے بیوی بچوں کا پیٹ پال رہے ہیں۔جو باقائدہ طور پر کینٹ بور ڈ کے لائسنس ہولڈر اور قومی خزانے میں سالانہ ہزاروں روپے فیس جمع کراتے ہیں لیکن بد قسمی سے شعبہ انسداد تجاوزا میں تعینات کرپٹ اور راشی اہلکاروں نے ان سے دو وقت کی روٹی کمانے کا حق بھی چھین لیا ہے آئے روز انہیں تنگ کرنا اور سامان اٹھا کر لیجانا معمول بنا لیا ہے۔مبینہ طو پر منتھلی دینے والوں کو چھوٹ دی جاتی ہے جبکہ جو لوگ لائسنس ہولڈر ہیں انہیں مختلف حیلوں، بہانوں سے تنگ کیا جاتا ہے۔

محنت کشوں نے کہا کہ موجودہ کنٹونمنٹ ایگزیکٹو آفیسر نے ریڑھیا ں چھوڑنے اور غریب مزدوروں پر جرمانے کرنے کے اختیار ات بھی اپنے پاس رکھے ہوئے ہیں جبکہ موجودہ سی ای او نہ کسی کی فون اٹینڈ کرتی ہیں اور نہ کسی کو ملتی ہیں۔جب بھی شکایت لیکر کینٹ کے دفتر میں جائیں تو سی او کا پی اے اعجاز ہمیں ملنے نہیں دیتا اور مختلف حیلے بہانے کرتا ہے۔کینٹ بورڈ آفس میں ہر جگہ افسر شاہی کا راج ہے۔جس کی وجہ سے غریب لوگ سارا سارا دن دفتر میں ذلیل وخوار ہوتے رہتے ہیں۔کینٹ بورڈ آفس کرپشن کا گڑھ بن چکا ہے عرصہ دراز سے سیٹوں پر براجمان افسران نے کینٹ بورڈ آفس کو اپنے گھر کی باندی جبکہ غریب عوام کو اپنی رعایا سمجھ رکھا ہے۔ محنت کشوں نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ محکمے میں موجود کرپٹ اور راشی اہلکاروں اور کالی بھیڑوں کا صفایا کیا جائے تاکہ غریب آدمی عزت کیساتھ دو وقت کی روزی روٹی کمانے کے قابل ہو سکے۔

شیئر کریں

Share on facebook
Facebook
Share on twitter
Twitter
Share on whatsapp
WhatsApp
Share on print
Print

اہم خبریں

error: Content is protected !!