ڈی آئی جی ہزارہ نے ذاتی تشہیر کرنیوالے پولیس افسران کی تصاویر فوری طور پر ہٹانے کا حکم جاری کردیا۔

ایبٹ آباد: ڈی آئی جی ہزارہ نے ذاتی تشہیر کرنیوالے پولیس افسران کی تصاویر فوری طور پر ہٹانے کا حکم جاری کردیا۔ اس ضمن میں ذرائع نے وائس آف ہزارہ کو بتایاکہ محکمہ پولیس میں بہت سے ایسے افسران اوراہلکار موجود ہیں جوسرکاری ڈیوٹی سے زیادہ ذاتی تشہیر کے شوقین ہیں۔

ہزارہ اور ایبٹ آباد کی خوش قسمتی ہے کہ اس مرتبہ ڈی آئی جی ہزارہ تعینات ہونیوالے ڈاکٹر مظہر الحق کالا خیل اور ڈی پی او ایبٹ آباد ذاتی تشہیر کے بالکل شوقین نہیں ہیں اور انہوں نے اپنی تصاویر شائع کروانے کی بجائے پرفیشنلزم کا مظاہرہ کرتے ہوئے پولیس کے تمام سوشل میڈیا کو کسی بھی قسم کی تصویر جاری نہ کرنے کا حکم جاری کیا ہے۔

ایبٹ آباد کے تھانہ میرپور، تھانہ کینٹ سمیت دیگر تھانوں کے ایس ایچ اوز نے اپنے علاقوں کے مختلف چوکوں چوراہوں میں اپنے اور پولیس افسران کی تصاویر کے پینا فلیکس لگوارکھے ہیں۔ نوتعینات ڈی آئی جی ہزارہ رینج نے پولیس افسران اور ایس ایچ اوز کی تصاویر چوکوں میں دیکھنے کے بعد سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہزارہ ریجن کے ڈی پی اوز کوحکم جاری کیاہے کہ اپنے علاقہ اختیار میں جہاں جہاں زندہ پولیس افسران کی تصاویر لگی ہیں ان کو فوری طور پر ہٹایا جائے۔ کیونکہ پولیس افسران اپنے کام،انصاف پسندی اور فرض شناسی کی وجہ سے پہچانے جاتے ہیں نہ کہ تصاویر ی نمائش سے۔ یہ تصاویر ہمارے شہداء کی ہمارے پاس ا مانت ہیں۔شہداء پولیس کی تصاویر کے علاوہ تمام اعلی و بالا افسران کی تصاویر وں کو ہٹا یا جائے۔

Facebook Comments