لوئرتناول میں کروڑوں کے فنڈز سے جاری ترقیاتی کاموں میں پیٹی ٹھیکیداروں کی جانب سے ناقص تعمیرات۔

تناول(وائس آف ہزارہ)اندھیر نگری چوپٹ راج عجب کرپشن غصب کہانی۔لوئر تناول میں کروڑوں کے فنڈز سے جاری کام میں ناقص میٹریل کا استعمال ہونے لگا۔ٹھیکیداروں نے سرکاری فنڈزکو دیمک کی طرح چاٹناشروع کردیا۔شیروان روڈ پر چوکلی سادات میں دیواروں کی تعمیر کے لیئے بھاری فنڈ سے تیار کی جانے والی دیواریں بغیر بنیاد کھودے اور آدھے سے زیازہ پرانی دیواریں میں سیمنٹ اور ریت سے سوراخ بھرکے پیمائیش پوری کرکے ٹھیکیدار چلتا بنا۔

دیوار کی تعمیر کے لیئے کوئی بیڈ بھی تعمیر نہیں کیا گیا دیوار کی سولنگ کے لیئے بجائے پتھر مٹی بھر دی گئی بارشوں کے موسم میں مٹی کے وزن سے دیواریں بیٹھنے کا خدشہ موجود ہے اس ضمن میں ذرائع نے بتایا کہ ناقص کام اور کرپشن کی بڑی وجہ اصل ٹھیکیدار کے آگے رکھے پیٹی ٹھیکدار ہیں اصل ٹھیکیدار ٹھیکے لے کر اپنا بھاری مارجن رکھ کر کام پیٹی ٹھیکیداروں کے حوالے کرکے منظر عام سے غائب ہوجاتے ہیں ذرائع نے مزید بتایا کے اس سارے دھندے میں متعلقہ محکموں کے اہلکاروں کی ملی بھگت بھی شامل ہوتی ہے جو بھاری نذرانوں کے عوض ناقص اور غیر معیاری کام کو پاس کرتے ہیں یہی وجہ ہے کہ یہ پراجیکٹ زیادہ دیر تک اپنی افادیت کو بررقرار نہیں رکھ سکتے۔

مقامی لوگوں نے ڈپٹی کمشنر ایبٹ آباد صوبائی مشیر مال قلندر خان لودھی اسپیکر مشتاق احمد غنی چیف سیکرٹری خیبرپختونخواہ وزیراعلی خیبرپختونخواہ اور ایم این اے علی خان جدون سے مطالبہ کیا ھے کہ محکموں اور ٹھیکیداروں کی ملی بھگت سے ہونے والی کرپشن کو روکنے کے لیئے کوئی جامع پالیسی وضع کریں تاکہ غریب عوام کے ٹیکس کے پیسے کو ضائع ہونے سے بچایا جاسکے اور قومی خزانہ بھی ایسے لٹیروں سے محفوظ ہوسکے۔

یہ بھی پڑھنا مت بھولیں

زیادہ پڑھی جانے والی خبریں

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران

نیوز ہزارہ

error: Content is protected !!