13

بنک الفلاح مین برانچ کے اہلکارکھاتہ داروں کیلئے عذاب بن گئے۔

ایبٹ آباد:بنک الفلاح مین برانچ کے اہلکارکھاتہ داروں کیلئے عذاب بن گئے۔ چیک کیش کرانے پرڈیڑھ گھنٹہ لگنے لگا۔ عوام کا شدید احتجاج۔ اس ضمن میں ایبٹ آباد کے شہریوں نے بتایاکہ بنک الفلاح جب پل برانچ میں نااہل عملہ تعینات کیاگیاہے۔ بنک میں موجود مردو خواتین حضرات جوڑوں کی شکل میں گپ شپ میں مصروف رہتے ہیں۔ جبکہ کیش کیلئے چار کاؤنٹربنائے گئے ہیں۔ ان کاؤنٹر پر صرف ایک مرد یا ایک خاتون ڈیوٹی کررہی ہوتی ہے۔ جب مرد ڈیوٹی کررہا ہوتا ہے تو خاتون کیشئرغائب ہوجاتی ہے۔ اور جب خاتون سیٹ پرآتی ہے تو مرد کیشئر خاموشی سے غائب ہوجاتاہے۔ بنک الفلاح میں کھاتہ داروں کی سہولت کیلئے ٹوکن سسٹم شروع کیاگیاہے۔ ٹوکن کا ٹائم آدھاگھنٹاپیچھے رکھاگیا ہے۔ تاکہ لوگوں کو بیوقوف بنایاجاسکے۔ کھاتہ داروں کے مطابق بنک میں معمولی نوعیت کا چیک کیش کرانے کیلئے تقریباً ڈیڑھ گھنٹے لگتے ہیں۔ جس کی وجہ سے لوگوں کا قیمتی وقت ضائع ہورہا ہے۔ اس مسئلے کی جانب بنک کے منیجر کی توجہ مبذول کروائی گئی۔ لیکن اس مسئلے کے حل کیلئے انہوں نے کوئی عملی اقدام نہیں اٹھایاہے۔ ایبٹ آباد کے شہریوں نے بنک الفلاح کے اعلیٰ افسران سے بنک کی سی سی ٹی وی فوٹیج کے ذریعے عملے کیخلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیاہے۔

Facebook Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں