ہمارا فیس بک پیج

ذیشان عارف قتل کیس: سابق صوبائی وزیر ابرار حسین عرف بالا سخت سیکورٹی میں عدالت میں پیش۔

مانسہرہ: ذیشان عارف قتل کیس۔سابق صوبائی وزیرجنگلات ابرار حسین عرف بالادوروزہ جسمانی ریمانڈ پرپولیس کے حوالے۔ذرائع کے مطابق غازیکوٹ کی سماجی شخصیت ذیشان عارف کے قتل کیس میں نامزد سابق صوبائی وزیر جنگلات ابرارحسین عرف بالا کو پولیس کی سخت سیکورٹی میں گزشتہ روز جوڈیشنل مجسٹریٹ کی عدالت میں پیش کیا گیا۔عدالت سے دوروزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیاگیا۔ذرائع کے مطابق مطابق تین رکنی انوسٹی گیشن ٹیم تشکیل دی گئی ھے۔جسمانی ریمانڈ کے بعد ابراربالا کو چیک اپ کے لیئے کنگ عبداللہ ہسپتال مانسہرہ لایا گیا۔جہاں پر ان کوجسمانی ریمانڈ کے لیئے فٹ قرار دیاگیا۔

س کے بعد ابرار بالا کوجسمانی ریمانڈ کے لئے تھانہ صدرمانسہرہ منتقل کر دیا گیا۔ابرار حسین عرف بالا کو جسمانی ریمانڈ کے لئے جب پیش کیا جارہاتھا۔تواحاطہ عدالت کے باہر بھی پولیس کی کثیر تعداد موجود تھی۔ابرارحسین عرف بالا کوپولیس نے گزشتہ روزفوارہ چوک ایبٹ آباد سے گرفتار کیاتھا۔جوضمانت قبل از گرفتاری کے لئے جارھے تھے۔ذیشان عارف کوقتل کرنے کے بعد ابرار بالا ساتھیوں سمیت فرار ھوگئے تھے۔

مقامی لوگوں کی جانب سے ابراربالاکولینڈ مافیاکاسرغنہ قرار دیا جارہاہے۔ذیشان عارف کو بے گناہ قتل کردیاتھا۔ذرائع کے مطابق ابرار بالا نے ذیشان عارف قتل کیس سے لاعلمی کا اظہار کیاہے۔اب دیکھنا یہ ہے دوران ریمانڈ ابرار بالا سے پولیس جرم قبول کروانے میں کس حد تک کامیاب ہوتی ہے؟

شیئر کریں

Share on facebook
Facebook
Share on twitter
Twitter
Share on whatsapp
WhatsApp
Share on print
Print

اہم خبریں

error: Content is protected !!